قومی اسمبلی ،آئین اور قانون کی بالادستی کی قرارداد متفقہ طورپرمنظور، اجلاس کل تک ملتوی

قومی اسمبلی ،آئین اور قانون کی بالادستی کی قرارداد متفقہ طورپرمنظور، اجلاس ...
قومی اسمبلی ،آئین اور قانون کی بالادستی کی قرارداد متفقہ طورپرمنظور، اجلاس کل تک ملتوی

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) قومی اسمبلی نے ملک میں آئین اور قانون کی بالادستی کی قرارداد متفقہ طورپرمنظور کرلی ہے اور اجلاس کل تک ملتوی کر دیا گیا ہے ۔

 تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی کا اجلاس سپیکر سردارایازصادق کی زیرصدارت شروع ہوا۔ کارروائی کے دوران ارکان اسمبلی نے ملک کی موجودہ صورتحال پر تبادلہ خیال کیا، پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے کے سربراہ محمود احمد خان اچکزئی نے ملک میں آئین اور قانون کی بالادستی کی قرارداد پیش کی۔ قرارداد میں کہا گیا تھا کہ منتخب ایوان اسمبلی کی تحلیل اور وزیراعظم کے استعفیٰ کو مسترد کرتا ہے اور بعض جماعتوں کی جانب سے کئے جانے والے غیرآئینی مطالبے مسترد کرتا ہے جس کے بعد قومی اسمبلی نے قرارداد کو متفقہ طور پر منظور کرلیا۔

علاوہ ازیں اجلاس میں اراکین اسمبلی نے دھرنوں سے پیداہونیوالی صورتحال پر اظہار خیال کیا ۔مسلم لیگ ن کی رکن اسمبلی تہمینہ دولتانہ کاکہناتھاکہ ہررکن قومی اسمبلی اتنے لوگ جمع کرسکتاہے لیکن فسادنہیں چاہتے ،پارلیمنٹ کے باہر ناچ گانا اور شوچل رہاہے ، تحریک انصاف کے دھرنے میں خواتین کا جوحال ہورہاہے ، وہ شرمناک ہے ، وزیراعظم کو کسی بھی صورت میں مستعفی نہیں ہونے دیں گے ،ہم نے جمہوریت اور نواز شریف کے لیے کاوشیں کی ہیں۔ ا±نہوں نے کہاکہ الیکشن میں دھاندلی نہیں ہوئی ، وہ بھی ہار چکی ہیں۔

اقلیتی رکن اسمبلی خلیل جارج کاکہناتھاکہ پارلیمان وزیراعظم کےسا تھ ہے ، کوئی طاقت استعفیٰ نہیں لے سکتی ،جس نے بھی بات کرنی ہے ، پارلیمنٹ میں آکر کرے۔

اراکین کی جانب سے اپنے خیالات کا اظہار کیے جانے کے بعد سپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق نے اجلاس کل صبح گیا رہ بجے تک ملتوی کر نے کا اعلان کر دیا ۔

مزید :

اسلام آباد -اہم خبریں -