ترکی نے کمال کردیا، مغربی ممالک کو اُن ہی کی زبان میں زوردار جواب دے دیا، چیخیں نکال دیں

ترکی نے کمال کردیا، مغربی ممالک کو اُن ہی کی زبان میں زوردار جواب دے دیا، ...
ترکی نے کمال کردیا، مغربی ممالک کو اُن ہی کی زبان میں زوردار جواب دے دیا، چیخیں نکال دیں

  

انقرہ(مانیٹرنگ ڈیسک) جیسے کو تیسا کے مصداق ترکی نے سویڈن کے بے بنیاد الزامات کا ایسا منہ توڑ جواب دیا ہے کہ سویڈن کو لینے کے دینے پڑ گئے ہیں۔ برطانوی اخبار ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق ترکی کی زیریں عدالت نے اعلیٰ عدلیہ میں ایک پٹیشن بھیجی تھی جس میں کہا گیا تھا کہ ملک میں بچوں کے خلاف جنسی تشدد کے حوالے سے الگ سے کوئی قانون موجود نہیں۔ ایسے مجرموں کو بھی جنسی زیادتی کے عام مجرموں کی طرح دیکھا جاتا ہے لہٰذابچوں اور بڑوں کے خلاف جنسی جرائم میں تفریق کی جانی چاہیے۔ اعلیٰ عدالت نے یہ پٹیشن رد کر دی اور ترک پارلیمنٹ کو 6ماہ کے اندر عدالتی احکامات کی روشنی میں قانون سازی کا حکم دے دیا۔ اس پر سویڈن کی وزیرخارجہ مارگوٹ والسٹرام نے اپنے ٹوئٹر اکاﺅنٹ پر لکھا کہ ”ترکی میں بچوں سے جنسی زیادتی کو قانونی حیثیت دی جا رہی ہے۔ یہ فیصلہ واپس لیا جانا چاہیے۔“

چینی فوج نے بڑے معرکے کی تیاری شروع کردی، ایسا کام کردیا کہ دشمنوں کی نیندیں اڑادیں

برطانوی اخبار ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق سویڈش وزیرخارجہ کی اس ٹویٹ کے جواب میں انقرہ کے اتاترک انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر ایک بڑا بینر آویزاں کر دیا گیا ہے، جس کی تحریرکچھ یوں ہے”سفری انتباہ! کیا آپ جانتے ہیں کہ دنیا میں سب سے زیادہ جنسی جرائم سویڈن میں ہوتے ہیں؟“انگریزی اور ترکی زبان میں یہ بینر روانگی سیکشن میں آویزاں کیا گیا ہے جہاں ایئرپورٹ سے باقی ممالک کو روانہ ہونے والا ہر مسافر اسے پڑھ رہا ہے۔ ترک اخبار ”گونیس“ نے بھی اپنے صفحہ اول پر سرخی جمائی ہے کہ ”سویڈن، جنسی زیادتیوں کا ملک۔“سویڈش وزیرخارجہ کی اس ٹویٹ پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ان کے ترک ہم منصب میولود چاﺅس اوگلو کا کہنا تھا کہ ”مارگوٹ والسٹرام کا بیان قطعی ناقابل قبول ہے۔ انہیں ذمہ دارانہ روئیے کا مظاہرہ کرنا چاہیے۔“ ان کا مزید کہنا تھا کہ ”ایئرپورٹ پر یہ بینر ایک پرائیویٹ کمپنی کی طرف سے لگایا گیا ہے۔“

مزید : بین الاقوامی