محکمہ پولیس میں ڈسپلن اینڈ انکوائری سسٹم کا آغازہوگیا

محکمہ پولیس میں ڈسپلن اینڈ انکوائری سسٹم کا آغازہوگیا

لاہور(وقائع نگار) محکمہ پولیس میں ڈسپلن اینڈ انکوائری سسٹم کو متعارف کروانے لئے کام کا آغاز کر دیا گیا ہے جبکہ ایف آئی آرز اور پولیس کے ریکارڈ کو آن لائن کرنے کے لئے بھی ڈیٹا اکٹھاکرنا شروع کر دیا گیا ہے۔ذرائع کے مطابق دو روز قبل آئی جی پنجاب کی زیرصدارت ایک اعلیٰ سطحی اجلاس ہوا ۔جس کا مقصد پولیس میں ڈسپلن اور انکوائری سسٹم کو متعارف کروا کے پولیس کے نظام کا شفاف بنانا اور پولیس کے ڈیٹا تک عام شہری کی رسائی کو ممکن بنانا تھا۔اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ پولیس میں ڈسپلن اینڈ انکوائری سسٹم کو متعارف کروایا جائے گا۔ذرائع کے مطابق اس حوالے سے ابتدائی ڈیٹا اکٹھا کرنے کا کام شروع کر دیا گیا ہے ۔ڈسپلن اینڈ انکوائری سسٹم کے ذریعے پولیس اہلکاروں کی حاضریاں اور تھانوں میں ان کی کارکردگی پر نہ صرف نظر رکھی جائے گی بلکہ ان کے خلاف کی جانے والی انکوائریز میں بھی آسانی پیدا ہو گی ۔ذرائع کے مطابق ایف آئی آرز کو آن لائن شہریوں کی رسائی تک دینے کے لئے بھی کام کا آغاز کر دیا گیا ہے اور پولیس کا تمام ریکارڈ حاصل کرنے کا سلسلہ شروع کر دیا گیا ہے ۔ذرائع کے مطابق سسٹم کے متعارف ہونے کے بعد کسی بھی تھانہ میں درج ہونے والی ایف آئی آر کو آن لائن پولیس کی ویب سائیڈ پر نہ صرف دیکھا جا سکے گا بلکہ اس کے علاوہ پولیس کی جانب سے اس مقدمہ میں کیا پیشرفت کی گئی ہے اس سے متعلق معلومات بھی فراہم کی جائیں گیں تاکہ شہریوں کو تھانوں کے چکر لگانے کی بجائے گھر بیٹھے ہی اپنے مقدمات میں ہونے والی پیش رفت کے حوالے سے معلومات مل سکیں ۔اسی طرح سے تھانوں میں بنائے گئے فرنٹ ڈیسک بھی مزید موثر ہو جائیں گی ۔ذرائع کے مطابق ایف آئی آرز کو مین سرور تک فرنٹ ڈیسک کے ذریعے ہی بھیجا جائے گا اور فرنٹ ڈیسک کے ذریعے ہی مقدمات میں ہونے والی پیش رفت کاآن لائن سسٹم تک پہنچایا جائے گا۔

مزید : علاقائی