سب کا احتساب چاہتے ہیں لیکن آغاز نواز شریف سے ہونا چاہیے: سراج الحق

سب کا احتساب چاہتے ہیں لیکن آغاز نواز شریف سے ہونا چاہیے: سراج الحق

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ ن لیگ سمیت سب کا احتساب ہونا چاہیے،نیب کے اختیارات میں اضافہ چاہتے ہیں،نیب کو شفاف ادارہ ہونا چاہیے۔اے آر وائی نیوز کے پروگرام ’’سوال یہ ہے‘‘میں گفتگو کرتے ہوئے امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ ن لیگ سمیت سب کا احتساب ہونا چاہیے،نیب کے اختیارات میں اضافہ چاہتے ہیں،نیب کو شفاف ادارہ ہونا چاہیے،حکومت پانامہ لیکس پر کمیشن بنانے میں ناکام ہوگئی ہے اس لیے عدالت جارہے ہیں،احتساب کیلئے ہماری تحریک جاری ہے،26اگست کو ملتان میں ریلی ہوگی،انہوں نے کہا ہے کہ جماعت اسلامی کا تحریک انصاف اور عوامی تحریک سے موقف مختلف ہے،قرضہ معاف کرانیوالوں میں حکومت اور اپوزیشن کے لوگ شامل ہیں،ہم سب کا احتساب چاہتے ہیں لیکن آغاز نواز شریف سے ہونا چاہیے۔انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا ہے کہ بااختیار کمیشن بنایا جائے جو سزا بھی تجویز کرے،قومی دولت لوٹنے والے کو کم از کم 25سال قید اور پاسپورٹ ضبط ہونا چاہیے،کرپشن کرنیوالوں کی اسمبلی رکنیت ختم کیا جائے،واضع کیا جائے آئندہ الیکشن ہوگا سلیکشن نہیں۔انہوں نے کہا ہے کہ حکومت مقبوضہ کشمیر کے موضوع پر خاموش ہے ،وزیر اعظم کو خود اس معاملے میں آگے آنا چاہیے،کشمیر کے مسئلے پر سفارتی جنگ کا اعلان کیا جائے،ہمیں اپنی جنگ خود لڑنی ہوگی،ہماری مدد کیلئے نہیں آئے گا۔

سراج الحق

مزید : صفحہ آخر