مرد طلاق کے حق کا غلط استعمال نہ کریں، انتہائی قدم اٹھانے سے پہلے اچھی طرح سوچیں: سعودی مفتی اعظم

مرد طلاق کے حق کا غلط استعمال نہ کریں، انتہائی قدم اٹھانے سے پہلے اچھی طرح ...
مرد طلاق کے حق کا غلط استعمال نہ کریں، انتہائی قدم اٹھانے سے پہلے اچھی طرح سوچیں: سعودی مفتی اعظم

  

جدہ(نیوزڈیسک)سعودی عرب کے مفتی اعظم شیخ عبدالعزیز الشیخ نے شادی شدہ جوڑوں پرزور دیا ہے کہ وہ طلاق کے معاملہ میں جلد بازی نہ کریں بلکہ یہ انتہائی قدم اٹھانے سے پہلے اچھی طرح سوچ لیں۔

سعودی شاپنگ مال میں غیر ملکی خواتین ’برائے فروخت‘ ملک میں ہنگامہ برپاہوگیا:تفصیلات کیلئے یہاں کلک کریں

عرب نیوز کے مطابق ایک ٹی انٹرویو میں شیخ عبدالعزیز نے کہا کہ طلاق کا فیصلہ صرف اس صورت میں کرنا چاہئے جب مفاہمت کا کوئی راستہ باقی نہ رہے اس سلسلہ میں جلد بازی کے بجائے اچھی طرح سوچا سمجھا جائے۔انہوں نے بتایا کہ لوگ فتویٰ لینے آتے ہیں جن میں طلاق جیسے معاملات سے متعلق سوالات بھی پوچھے جاتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ نوجوانوں میں اس حوالے سے کم علمی پائی جاتی ہے اس لئے بیشتر ایسے افراد بھی آتے ہیں جوپوچھتے ہیں کہ طلاق کے بعد وہ اپنی بیوی کوکیسے واپس لا سکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیئے۔۔ایک ایسی وجہ کہ سعودی شہری اپنی دونوں بیویوں کو عدالت لے جانے پر مجبور ہوگیا  

انہوں نے ملک میں طلاق کی بڑھتی ہوئی شرح پر اظہار تشویش کیا اور کہا کہ شادی شدہ جوڑے خصوصا نوجوان مرداللہ کی طرف سے دیئے گئے اس اختیار کا اپنی بیویوں کے خلاف غلط استعمال کرتے ہیں،وہ ایسا نہ کریں۔انہوں نے کہا طلاق معاشرے کو کمزور، گھروں کو تباہ اور بچوں کو بے گھر کردیتی ہے۔میاں بیوی کو ایسی کسی بھی صورت میں تحمل کے ساتھ اپنے بچوں کے مستقبل کا سوچنا چاہئے۔

مزید : عرب دنیا