ن لیگ کی جانب سے قو می اسمبلی میں دو الگ الگ تحریک التوا جمع

ن لیگ کی جانب سے قو می اسمبلی میں دو الگ الگ تحریک التوا جمع

اسلام آباد (آئی این پی) مسلم لیگ (ن) نے 25جولائی کے عام انتخابات کے نتائج میں کی جانے والی تاخیر اور الیکشن کمیشن کی طرف سے نتائج کو تیار کرنے کیلئے بنائے گئے آر ٹی ایس سسٹم کے خراب ہونے کا معاملہ قومی اسمبلی میں اٹھانے کیلئے تحریک التواء اسمبلی سیکرٹریٹ میں جمع کرا دی گئی جبکہ ایک اور تحریک التواء بھی جمع کرائی گئی جس میں مسلم لیگ (ن) کے قائد میاں نواز شریف کو اڈیالہ جیل میں قید تنہائی میں رکھنے اور انہیں بکتر بند گاڑی میں احتساب عدالت لانے کا معاملہ بھی ایوان میں زیر بحث لانے کا مطالبہ کیا گیا ہے، تفصیلات کے مطابق سرگودھا سے مسلم لیگ (ن) کے رکن قومی اسمبلی سید جاوید حسنین کی طرف سے قومی اسمبلی میں دو الگ الگ تحاریک التوا جمع کرائی گئی ہیں پہلی تحر یک میں بتا یاگیا ہے کہ 25جولائی 2018کو ہونے والے جنرل الیکشن سے پہلے قومی اسمبلی اور سینیٹ میں موجود پولیٹیکل پارٹیز نے ماضی کے الیکشن لاز کو یکجا کر کے ایک نیا قانون الیکشن ایکٹ 2017پاس کیا تا کہ ملک کے اندر الیکشن صاف شفاف اور غیر جانبدارانہ ہو سکیں اور الیکشن کمیشن کی تشکیل کیلئے بھی موثر اقدامات اٹھائے گئے مگر 25جولائی 2018کو ہونے والے الیکشن کو الیکشن کمیشن اور اس کے بدانتظامی والے فیصلوں نے مکمل طور پر دھاندلی زدہ بنا دیا،20ارب روپے کی خطیر رقم سیاہ کاریوں کی نظر ہو گئی،آر ٹی ایس مکمل طور پر ختم ہو گیا،من پسند رزلٹ لینے کیلئے حکومتی مشنری کو جھونک دیا گیا، دنیا کے سامنے جو تماشا بنایا گیا اس سے سارے ملک میں تشویش پائی جاتی ہے،لہٰذا اس اہم تحریک کو منظور کیا جائے تا کہ پس پردہ حقائق سے پردہ اٹھایا جا سکے۔

تحریک التوا

مزید : صفحہ آخر