سپریم کورٹ ،ایل پی جی گیس کی دریافت کا غیر قانونی ٹھیکہ دینے کیخلاف درخواست پر وفاقی حکومت اور وزارت پانی و بجلی کو نوٹس

سپریم کورٹ ،ایل پی جی گیس کی دریافت کا غیر قانونی ٹھیکہ دینے کیخلاف درخواست ...

لاہور(نامہ نگار خصوصی )سپریم کورٹ نے ایل پی جی گیس کی دریافت کا غیر قانونی ٹھیکہ دینے کے خلاف دائردرخواست پر وزارت پانی و بجلی اور وفاقی حکومت کو نوٹس جاری کردیئے ہیں ۔چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں قائم3رکنی بنچ نے سابق ایم این اے خواجہ آصف کی درخواست پر سماعت کی ،عدالت میں کمپنی کے وکیل خواجہ طارق رحیم کی جانب سے بتایا گیا کہ سپریم کورٹ محکمہ سوئی گیس اور جام شورو جوائنٹ وینچرز لمیٹڈ میں گیس دریافت کا معاہدہ غیر قانونی قرار دے چکی ہے، سپریم کورٹ نے فیصلے میں لاگت اور قومی خزانے کو نقصان کے تعین و تحقیقات کا حکم دیا تھا، فیصلے کے مطابق ٹرم آف ریفرنس پیش کرنے ہیں چیف جسٹس نے کہا کہ آپ کی ٹینڈرنگ کر والیتے ہیں، آپ کو بہت ساری رقم دینی پڑے گی جس پر سرکاری وکیل نے جواب دیاکہ ٹینڈرنگ کروانے سے قومی خزانے کو نقصان ہو گا،چیف جسٹس نے کہا کہ کیا آپ سمجھتے ہیں کہ اس کمپنی کو او جی ڈی سی ایل نہیں چلا پائے گی؟قومی مفاد کا معاملہ بنا کر آپ مراعات لیتے رہے ہیں، وصول کنندہ تعینات کر دیتے ہیں تا کہ قومی خزانے کو نقصان نہ ہو،چیف جسٹس نے کہا کہ آپ کی کمپنی کو نیشنلائز کر دیتے ہیں ،چیف جسٹس نے خواجہ طارق رحیم سے کہا کہ ہنسی ہنسی میں آپ ملک ریاض کے لئے بھی مجھ سے ریلیف لے چکے ہیں، بحریہ ٹاؤن والا 5بلین نہیں بلکہ 100 بلین ادا کرے گا،خواجہ طارق رحیم نے کہا کہ بحریہ ٹاؤن نے 7بلین روپے ادا کئے ہیں جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ اس کیس میں فائل خود بول رہی ہے کہ کیا ہوتا رہا ہے ؟لگتا ہے یہ حکومت توکسی کومفادات نہیں لینے دے گی۔ عدالت نے آئندہ سماعت پر کمپنی کے وکیل کو پروپوزل پیش کرنے کی ہدایت بھی کی ہے ۔

ایل پی جی کا ٹھیکہ

مزید : صفحہ آخر