راجہ بشارت کیخلاف سیمل کامران کی درخواست کا 3ماہ میں فیصلہ کیا جائے سپریم کورٹ کا فیملی کورٹ کو حکم

راجہ بشارت کیخلاف سیمل کامران کی درخواست کا 3ماہ میں فیصلہ کیا جائے سپریم ...

لاہور(نامہ نگارخصوصی)سپریم کورٹ نے فیملی کورٹ کو حکم دیا ہے کہ پی ٹی آئی کے ایم پی اے اورسابق صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت کے خلاف سیمل کامران کی درخواست کا 3ماہ میں فیصلہ کیا جائے۔عدالت عظمیٰ نے نکاح نامہ اور دیگر دستاویزات کا فرانزک آڈٹ کرانے کی ہدایت بھی کی ہے ۔سیمل کامران نے عدالت سے استدعا کی کہ میری راجہ بشارت سے علیحدگی میں ملاقات کروائی جائے،راجہ بشارت میرے ساتھ شادی تسلیم کر چکے ہیں جس پرچیف جسٹس نے سابق ایم پی اے سیمل کامران سے کہا کہ آپ خاموش ہو جائیں یہ عدالت ہے اسمبلی کا فورم نہیں ،قریب تھا کہ آپ کا مسئلہ حل ہو جاتا ،راجہ بشارت ایک کروڑ روپے دینے کو بھی تیار تھے۔آپ کے مطالبہ کے مطابق آپ کو گھر دلانا میرا اختیار نہیں۔آپ خلع بھی نہیں لینا چاہتیں ، طلاق دینا مرد کا اختیار ہے ،عدالت اس اختیار کو ختم نہیں کر سکتی،آپ چاہتی تھیں کہ آپ پر تہمت نہ لگے ،عدالت نے آپ کا مان رکھا، سیمل کامران نے کہا کہ راجہ بشارت نے میرے ساتھ شادی کی اور عوام الناس کے سامنے تفصیلات چھپائیں،راجہ بشارت نے کاغذات نامزدگی میں بھی شادی کی تفصیلات چھپائیں،شریف زادے سیاستدان نے آپ کے سامنے شادی کا اقرار کیا۔عوامی سطحِ پر شادی سے انکار کر کے مجھ پر تہمت لگاتے ہیں،مجھ سے انصاف کیا جائے، راجہ بشارت 62،63 پر پورا نہیں اترتے۔چیف جسٹس نے خاتون سے کہا کہ آپ کے درمیان مصالحت نہیں ہو سکی آپ متعلقہ عدالت میں اپنا کیس لڑیں،متعلقہ عدالت 3 ماہ میں فیصلہ کرے گی۔سیمل کامران عدالت میں روتی رہی،ایک موقع پر ایسا لگا کہ وہ بے ہوش ہوگئی ہیں ۔

راجہ بشارت

مزید : صفحہ آخر