وزیر اعلیٰ سے کور کمانڈر ،آئی جی خیبر پختونخوا اورپیسکو حکام کی ملاقات

وزیر اعلیٰ سے کور کمانڈر ،آئی جی خیبر پختونخوا اورپیسکو حکام کی ملاقات

پشاور( سٹاف رپورٹر)وزیراعلی ٰخیبرپختونخوا محمود خان سے کور کمانڈر پشاور نے وزیر اعلیٰ سیکرٹریٹ میں ملاقات کی ، ملاقات میں باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا، وزیر اعلیٰ نے خیبر پختونخوا کے وسائل اور صوبائی حکومت کے ترقی کے پلان پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ اس صوبے میں معاشی طور پر ایک مستحکم یونٹ بننے کی بھرپور صلاحیت موجود ہے ، خیبر پختونخوا میں بہت زیادہ سیاحتی مقامات اور قدرتی وسائل ہیں انکی حکومت صوبے کے وسائل اور سیاحتی مقامات کو ترجیحی بنیادوں پر ترقی دے گی اور نئے وسائل و ذخائر کی دریافت کیلئے اقدامات کرے گی،روزگار کے زیادہ سے زیادہ وسائل پیدا کرنا بھی ہماری ترجیح ہے،ہم اپنے قدرتی ذخائر کو مجموعی معاشی ترقی کیلئے بروئے کار لائینگے اور مواصلاتی نیٹ ورک کو مضبوط بنائینگے۔ محمود خان نے کہا کہ فاٹا اصلاحات پر تیز رفتار عملدرآمد، نئے اضلاع کو ترقی دینا اور وہاں تعلیم ، صحت اور دیگر سہولیات کی فراہمی ہمارا ہدف ہے،نئے اضلاع میں میرٹ پر بھرتیاں یقینی بنائیں گے تاکہ قابل اور اہل لوگ آگے آئیں اور اپنی ترقی بہتر طریقے سے خود پلان کر سکیں۔انہوں نے کہا کہ صوبے کے بعض اضلاع قدرتی آفات ، سیلاب ، زلزلے اور دہشتگردی سے بہت متاثر ہوئے ہیں ان متاثرہ اضلاع میں انفراسٹرکچر کی بحالی کیلئے ایک زبردست ماسٹر پلان پہلے سے بنا چکے ہیں،وزیر اعلیٰ نے کہا کہ وہ خدمات کی فراہمی پر ایسا مضبوط اور شفاف نظام وضع کریں گے جس میں کرپشن ، اقرباء پروری اور بد عنوانیوں کی کوئی جگہ نہیں ہو گی،جن اضلاع میں سکولوں ، یونیورسٹیوں اور صحت کے اداروں کی کمی ہے وہ ترجیحی بنیادوں پر پوری کریں گے انہوں نے کہا کہ وہ صوبے میں سماجی خدمات کے اداروں کو مضبوط بنائیں گے تاکہ ادارے اپنے دائرہ اختیار میں بہترین ڈیلیوری دیں اور عوام کو ریلیف مل سکے۔

پشاور( سٹاف رپورٹر)وزیراعلی ٰخیبرپختونخوا محمود خان سے پیسکو کے اعلیٰ حکام نے وزیر اعلیٰ سیکرٹریٹ پشاور میں ملاقات کی ، ملاقات میں پشاور ، ملاکنڈ سمیت صوبہ بھر میں بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ اور دیگر متعلقہ مسائل پر تبادلہ خیال کیا گیا۔اراکین صوبائی اسمبلی اشتیاق اڑمراور محب اللہ بھی ملاقات کے دوران موجود تھے،وزیر اعلیٰ نے بجلی کی منصفانہ تقسیم کیلئے طریق کار وضع کرنے کی ہدایت کی تاکہ فیڈرز پر اضافی بوجھ کو کم کیا جا سکے اور لوڈشیڈنگ کا خاتمہ ممکن ہو سکے،وزیر اعلیٰ نے مٹہ (سوات) فیڈر پر کام کی رفتار تیز کرنے کی ہدایت کی،انہوں نے سابق وزیر اعظم کے اعلان کردہ گرڈ سٹیشن کے قیام پر بھی پیش رفت طلب کی جس پر پیسکو حکام نے بتایا کہ گرڈ سٹیشن کیلئے زمین کا انتظام ہو چکا ہے تاہم وفاقی حکومت نے وسائل نہیں دیئے وزیر اعلیٰ نے گرڈ سٹیشن کے قیام کیلئے مطلوبہ وسائل پر مبنی کیس تیار کرنے کی ہدایت کی اور کہا کہ خوش قسمتی سے اس وقت مرکز میں بھی ہماری حکومت ہے ، عوامی ضروریات کو پورا کرنے کیلئے وسائل کے حصول کے سلسلے میں کوئی رکاوٹ نہیں ہو گی،وزیر اعلیٰ کو بتایا گیا کہ فیڈر کے قیام اور ہسپتال میں بجلی کے کنیکشن پر بھی تیز رفتاری سے کام جاری ہے جو عید کے دنوں میں ہی مکمل کر لیا جائے گا، وزیر اعلیٰ نے پیسکو حکام کو ہدایت کی کہ وہ سوات کا دورہ کریں اور لوڈ شیڈنگ کا مسئلہ ترجیحی بنیادوں پر حل کریں کیونکہ اسکی وجہ سے امن و امان کا مسئلہ پیدا ہوتا ہے انہوں نے کہا کہ لوڈ شیڈنگ اور دیگر مسائل کے دیرپا حل کیلئے سسٹم کو ٹھیک کرنے کی ضرورت ہے ، محمود خان نے اراکین صوبائی اسمبلی اشتیاق ارمڑ اور محب اللہ سے بھی کہا کہ وہ پیسکو حکام کے ساتھ بیٹھیں اور اپنے اپنے حلقوں میں مسائل کا قابل عمل حل نکالیں انہوں نے پیسکو کے اپنے مسائل کی بھی تفصیلی رپورٹ تیار کرنے کی بھی ہدایت کی اور عندیہ دیا کہ صوبائی حکومت پیسکو کے مسائل حل کرنے میں مدد کرے گی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر