عید، ٹماٹر سیب سے بھی مہنگا، مصالحہ جات بھی پہنچ دور سے

عید، ٹماٹر سیب سے بھی مہنگا، مصالحہ جات بھی پہنچ دور سے

ملتان‘ راجن پور(نیوزرپورٹر‘ڈسٹرکٹ رپورٹر) عیدالاضحی کی آمدکے ساتھ ہی (بقیہ نمبر19صفحہ12پر )

اشیائے خوردنوش کی قیمتیں آسمان سے باتیں کرنے لگی ہیں۔ اوپن مارکیٹ میں گرانفروش مافیا نے ضلعی انتظامیہ کی جانب سے مقررہ نرخنامہ کو ہوا میں اڑا کررکھ دیا ہے۔ بالخصوص مصالحہ جات، ہری مرچ، دھنیاں،ٹماٹر،ادرک اور لہسن کی قیمتوں میں دگنا اضافہ کردیا گیا ہے اسی طرح دیگر سبزیوں اور پھلوں کی قیمتوں میں بھی خود ساختہ اضافہ ریکارڈ کیاگیا ہے۔مارکیٹ کمیٹی کے مقررہ نرخنامہ کے مطابق ٹماٹر کوئٹہ درج اول 77روپے کلو ہے جبکہ اوپن مارکیٹ میں ٹماٹر 100روپے کلو سے بھی تجاوز کرچکاہے۔ لہسن چائنا77روپے کلو جبکہ مارکیٹ میں120روپے کلو فروخت کیاجارہا ہے۔ سبزدھنیاں 100روپے کلوجبکہ مارکیٹ میں150روپے فی کلو فروخت کیا جارہا ہے۔ سبزمرچ 66روپے کلو مارکیٹ100روپے کلو شملہ مرچ درجہ اول 100روپے کلو مارکیٹ 130روپے کلو مٹرسوائی240روپے کلو مارکیٹ میں300روپے فروخت ہورہے ہیں بندگوبھی 100روپے کلومارکیٹ میں130روپے کلو فروخت آلو چھلکے والا40روپے کلو مارکیٹ 60روپے کلوپیاز 33روپے کلومارکیٹ 60روپے کلوفروخت کیاجارہا ہے۔ کریلا 45روپے کلو مارکیٹ 60روپے کلولیموں 100روپے کلومارکیٹ 150روپے کلو ادرک چائنا 132روپے کلو مارکیٹ 180روپے کلو فروخت کھیرا 55روپے کلو مارکیٹ 70روپے کلو فروخت ہورہا ہے۔ صارفین نے ضلعی انتظامیہ ومارکیٹ کمیٹی کے عملہ سے مطالبہ کیا ہے کہ گرانفروش مافیا کیخلاف کارروائی کرتے ہوئے انہیں مقررہ نرخوں پراشیائے خوردنوش کی فروخت کو یقین بنانے پر عملددرآمد کیاجائے علاوہ ازیں عیدقر بان کی آمد سے قبل ہی سبزیوں خصوصاً ٹماٹر ،پیاز ،لہسن ،ادرک،گھی ،مصالحہ جات اور سبزمرچ کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ ہوگیا گراں فروشوں نے مارکیٹ کمیٹی کی مقررکردہ ریٹ لسٹ کویکسر مسترد کردیا ہے دوکانداروں اور شہریوں میں نرخوں پر تکرار جاری ہے شہریوں نے اس موقع پر احتجاج کرتے ہوئے بتایا کہ ضلعی انتظا میہ مکمل طور پرسو چکی ہے اور گراں فروش شہریوں کودو نوں ہاتھوں سے لوٹنے میں مصروف ہیں ایسے میں گراں فروشوں کے حوصلے بلند ہوچکے ہیں شہریوں نے ڈپٹی کمشنر راجن پور سے اس حوالے سے مجسٹر یٹ صاحبان کو اچانک چھاپے مار نے اور مقرر کردہ نرخوں پرسبزیاں اور اشیائے خوردو نوش کی فروخت کویقینی بنانے کا مطا لبہ کیا ہے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر