سرائیکستان صوبے کے قیام سے لوگوں کے مسائل حل ہوں گے، غلام فرید کو ریجہ

سرائیکستان صوبے کے قیام سے لوگوں کے مسائل حل ہوں گے، غلام فرید کو ریجہ

صادق آباد(نمائندہ پاکستان)جنوبی پنجاب صوبہ کا قیام خطہ کے سرائیکیوں کا استحصال کرنے کے مترادف ہو گا‘ جنوبی پنجاب صوبہ کے مطالبہ کو مسترد کر تے ہیں سرائیکستان صوبہ (بقیہ نمبر42صفحہ12پر )

کے قیام سے ہی سرائیکی عوام کے حقوق اور مسائل حل ہونگے ‘2018کے الیکشن میں عوام نے تحریک انصاف کو جو مینڈیٹ دیا ہے امید کرتے ہیں کہ تحریک انصاف اپنے 100دنوں کے پلان کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کی کوشش کرے گی اور اگر ایسا ممکن نہ ہوا تو پھر اس کا حال بھی دیگر سیاسی جماعتوں کی طرح ہو گا‘ ملک میں پانی کی قلت کی وجہ سے ڈیموں کا قیام نا گزیر ہے سیاسی، معاشی اور اقتصادی ترقی کیلئے حکومت کو بڑے چیلنجز کا سامنا ہے ضمنی الیکشن میں ضرورحصہ لیں گے ۔ ان خیالات کا اظہارچےئرمین سرائیکستان صوبہ محاذ اور سربراہ سرائیکستان قومی اتحاد خواجہ غلام فرید کوریجہ نے پریس کلب صادق آباد میں اخبا رنویسوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر تحصیل صدر سرائیکستان قومی اتحاد حافظ جاوید کوریجہ‘ رئیس رمضان فریدی‘ملک ریاض سولنگی ‘ملک زاہد ودیگر بھی موجود تھے ۔ انھوں نے کہاکہ کسی صورت سرائیکیوں کو تقسیم نہیں ہونے دینگے ، خطہ کی تہذیب کو ختم کرنیوالے عناصر پہلے کامیاب ہوئے ہیں نہ آئندہ کامیاب ہونگے سرائیکیوں کی اپنی ایک الگ پہچان ہے ،نوجوانوں کے بہتر اور روشن مستقبل کیلئے حکومت کیا کردارادا کرتی ہے یہ آنیوالا وقت ہی بتائے گا، انھوں نے کہاکہ سرائیکستان صوبہ کے قیام کیلئے اپنی جدوجہد اور کوشش جاری رکھیں گے ، وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار کی تعیناتی سے جنوبی پنجاب کے مسائل حل نہیں ہوں گے کیونکہ موصوف نے ماضی قریب بطور تحصیل ناظم ٹرائبل ایریا اور ڈیرہ غازی خان سمیت راجن پور میں تعمیراتی و ترقیاتی کاموں کے حوالے سے کوئی کردارادا نہیں کیا ہے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر