غداری کا مقدمہ ، بالآخر سابق فوجی صدر پرویز مشرف نے بھی خاموشی توڑ دی

غداری کا مقدمہ ، بالآخر سابق فوجی صدر پرویز مشرف نے بھی خاموشی توڑ دی
غداری کا مقدمہ ، بالآخر سابق فوجی صدر پرویز مشرف نے بھی خاموشی توڑ دی

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سابق صدر پرویز مشرف نے سنگین غداری کیس میں پیر کے روز پیش ہونے کے لئے صدارتی سطح کی سیکورٹی کی درخواست کر دی۔

تفصیلات کے مطابق پرویز مشرف کے خلاف انسدا د دہشت گردی کی عدالت میں سنگین غداری کا مقدمہ زیر سماعت ہے۔ دو رکنی بینچ خصوصی عدالت میں کیس کی سماعت کر رہا ہے ۔گزشتہ سماعت میں پرویز مشرف کے وکیل اختر شاہ نے عدالت کو بتایا کہ وہ اپنے کلائنٹ کو عدالت کے سامنے پیش کرنا چاہتے ہیں ۔ لیکن یقین دہانی کرائی جائے کہ وہ وزارت دفاع کی طرف سے صدارتی سیکورٹی دے جائے گی کیونکہ سابق صدر پرویز مشرف کی زندگی خطرے میں ہے۔اکبر بگٹی کیس کے سماعت کے دوران جسٹس نظر اکبر نے ریمارکس دیئے تھے کہ مشرف کے خلاف ضمانت غیر مستحکم ہے، تاہم اس کو سیکورٹی دینا حکومت کی ذمہ داری ہے۔

واضح رہے کہ پرویز مشرف کو3نومبر 2007کو آئین کو معطل کرنے کے الزامات کا سامنا ہے جبکہ مارچ 2016 میںپرویز مشرف کمر میں تکلیف کی بنا پر علاج کے لئے بیرون ملک چلے گئے اور واپس نہیں آئے۔

مزید : جرم و انصاف /علاقائی /اسلام آباد