”وزیراعظم چیئرمین پی سی بی لگا سکتا ہے اور نہ ہٹا سکتا ہے البتہ۔۔۔“ نجم سیٹھی نے استعفے کے بعد حیران کن بات کہہ دی، جان کر آپ کو بھی یقین نہیں آئے گا

”وزیراعظم چیئرمین پی سی بی لگا سکتا ہے اور نہ ہٹا سکتا ہے البتہ۔۔۔“ نجم ...
”وزیراعظم چیئرمین پی سی بی لگا سکتا ہے اور نہ ہٹا سکتا ہے البتہ۔۔۔“ نجم سیٹھی نے استعفے کے بعد حیران کن بات کہہ دی، جان کر آپ کو بھی یقین نہیں آئے گا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان کرکٹ بورڈ کے سابق چیئرمین نجم سیٹھی نے کہا ہے  کہ وزیر اعظم  نہ ہی کسی کو چیئرمین پی سی بی  لگا سکتا ہے نہ ہی فارغ کر سکتا ہے۔

جیونیوز کے پروگرام ”آج شاہ زیب خانزادہ کے ساتھ“ میں گفتگو کرتے ہوئے نجم سیٹھی نے کہاہے کہ میں چاہتا ہوں کہ ہمیں اچھی روایت بنانی چاہئے کہ جب  بھی نیا وزیر اعظم آئے تو وہ  پی سی بی میں اپنی ٹیم لے کر آئے ، کیوں کہ وزیر اعظم  پی سی بی کا پیٹرن انچیف ہوتا ہے اس کے پاس یہ اختیا ر نہیں ہوتا کہ وہ کسی کو  چیئرمین لگائے نا ہی نکالے ،البتہ وہ بورڈ کے ا ندر اپنا منتخب بندہ لگا سکتا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ چیئرمین کی ٹرم تین سال کی ہوتی ہے ،میں  پچھلے سال منتخب ہوا ہوں ، میری مدت ابھی دوسال رہتی تھی ، میں نے سوچا کہ نیا وزیر اعظم  آیا ہے اور وہ ایک کرکٹ لیجنڈ بھی ہے اس لئے اس کو  پاکستان کرکٹ بورڈ میں اپنی ٹیم لیکر آنی چاہئے۔

شاہ زیب خان زادہ کے سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ میرے استعفیٰ کے حوالے سے  میڈیا میں بہت باتیں شروع ہوگئیں تھیں اور کچھ پی ٹی آئی کے لوگو ں نے بھی تنقید کرنا شروع کر دی تھی ،اس لئے میں نے سوچا کہ اگرپی سی بی کے اندر غیر یقینی صورتحال پیدا ہوگئی توپی سی بی کو جو نقصان ہو گا پی ایس ایل اڑ جائے گا۔

نجم سیٹھی نے کہا کہ پاکستان سپر لیگ نے آنے والے وقتوں میں بہت بڑی انوسمنٹ ے کر آنی ہے اگر پی ایس ایل میں غیر یقینی صورتحال پیدا ہوگئی تو  اس کو نقصان ہوگا اس  لئے میں نے سوچا کہ پی ایس ایل کی بہتری کے لئے استعفیٰ دے دینا چاہئے تاکہ  نئی آنے والی ٹیم اس صورتحال کو جلد از جلد قابو کر لے۔

مزید : کھیل