حکومت کی نااہلی کو کسی عدالتی فیصلے سے ٹھیک نہیں کیا جا سکتا،اسلام آبادہائیکورٹ

حکومت کی نااہلی کو کسی عدالتی فیصلے سے ٹھیک نہیں کیا جا سکتا،اسلام ...
حکومت کی نااہلی کو کسی عدالتی فیصلے سے ٹھیک نہیں کیا جا سکتا،اسلام آبادہائیکورٹ

  


اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)اسلام آباد ہائی کورٹ میں ایڈہاک اور ڈیلی ویجز ملازمین کیس میں جسٹس محسن اختر کیانی نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت کی نااہلی کو کسی عدالتی فیصلے سے ٹھیک نہیں کیا جا سکتا، یہ حکومت کے انتظامی مسائل ہیں اور آگے بھی رہیں گے، ایڈہاک اور ڈیلی ویجز پر بھرتیاں استحصال ہیں، اس لئے انہیں روک دیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آبادہائیکورٹ میں ایڈہاک اور ڈیلی ویجز ملازمین کیس کی سماعت ہوئی،جسٹس محسن اختر کیانی نے کیس کی سماعت کی ،جسٹس محسن اختر کیانی نے کہا کہ قانون کے مطابق پہلی ترجیح آپ ہیں،نئی بھرتیوں کا آپ سے تعلق نہیں، عدالت نے استفسار کیا کہ ایف پی ایس سی نے جواب جمع نہیں کرایا ، جسٹس محسن اختر کیانی نے کہا کہ حکومت کی نااہلی کو کسی عدالتی فیصلے سے ٹھیک نہیں کیا جا سکتا، یہ حکومت کے انتظامی مسائل ہیں اور آگے بھی رہیں گے، ایڈہاک اور ڈیلی ویجز پر بھرتیاں استحصال ہیں، اس لئے انہیں روک دیا تھا،عدالت نے کیس کی سماعت 16 ستمبر تک ملتوی کردی۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد


loading...