زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کے لیکچررز  کو ملازمت سے برخاست کرنے  کے احکامات معطل 

زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کے لیکچررز  کو ملازمت سے برخاست کرنے  کے احکامات ...

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ نے زرعی یونیورسٹی فیصل آباد کے لیکچررز کو ملازمت سے برخاست کرنے کے احکامات معطل کرتے ہوئے وائس چانسلرسے تفصیلی رپورٹ طلب کرلی،مسٹر جسٹس جواد حسن نے یہ عبوری حکم امتناعی عظمیٰ ستار، عائشہ مشتاق، انعم اصغر، علی حسن اور بشریٰ عمر کی درخواستوں پرجاری کیا،فاضل جج نے زرعی یونیورسٹی فیصل آباد انتظامیہ سے اس بابت وضاحت بھی طلب کی ہے کہ عدالتی حکم امتناعی کے باوجود درخواست گزاروں کیوں برطرف کیا گیا؟ درخواست گزاروں کے وکیل صفدر شاہین پیرزادہ نے عدالت میں موقف اختیار کیا گیا کہ عدالت نے درخواستوں پر وی سی زرعی یونیورسٹی کو کارروائی سے روک رکھا تھا، عدالتی حکم کے باوجود یونیورسٹی انتظامیہ نے درخواست گزاروں کو ملازمت سے برطرفی کا حکم نامہ جاری کردیا، تین سال قبل تحریری امتحان اور انٹرویو کے بعد لیکچرار بھرتی کیا گیا، زرعی یونیورسٹی فیصل آباد میں بطور لیکچرار کنٹریکٹ پر گریڈ 18 میں بھرتی کیا گیا، اچھی کارکردگی کی بنیاد پر بار بار کنٹریکٹ میں توسیع کی جاتی رہی، ستمبر 2019 کو ختم ہونیوالے کنٹریکٹ میں نہ توسیع کی جا رہی اور نہ مستقل کیا جارہا ہے، یونیورسٹی انتظامیہ کا ملازمت سے برطرفی کا حکم نامہ کالعدم قرار دیا جائے،درخواست میں یونیورسٹی انتظامیہ کو انہیں مستقل کرنے اوروی سی یونیورسٹی کو ممکنہ برطرفی سے روکنے کی استدعابھی کی گئی ہے۔

 احکامات معطل 

مزید :

صفحہ آخر -