4 ہزار ایکڑ اراضی پر غیر قانونی قبضہ کرنے کے خلاف  دائردرخواست پر وکالت نامے جمع کروا دیئے 

  4 ہزار ایکڑ اراضی پر غیر قانونی قبضہ کرنے کے خلاف  دائردرخواست پر وکالت ...

  

لاہور(نامہ نگار)سول کورٹ میں شریف فیملی کے خلاف جاتی امراء میں 4 ہزار ایکڑ اراضی پر غیر قانونی قبضہ کرنے کے خلاف دائردرخواست پر قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر میاں شہباز شریف اور ان کی بھتیجی مریم نواز کے وکلا ء نے وکالت نامے جمع کروا دیئے ہیں، جس میں میاں شہباز شریف اور مریم نواز کے وکلاء نے جواب جمع کروانے کے لئے مہلت مانگ گئی ہے،عدالت نے میاں شہباز شریف اور ان کی مریم نواز کے وکلاء کو مہلت دیتے ہوئے سماعت 12 ستمبر تک ملتوی کردی،سول جج فوزیہ سائرہ نے ڈاکٹر عبدالرؤف کی درخواست پر سماعت کی،درخواست گزار کا موقف ہے کہ شریف فیملی نے جاتی امراء میں ہمارے آباؤ اجداد کی طرف سے ملنے والی 4 ہزار ایکٹر زمین پر غیر قانونی طور پر قبضہ کیا، آباؤ اجداد نے 1911ء میں اس وقت کی راجھ باہ گورنمنٹ سے اراضی خریدی تھی، زمین کا اصل مالک پیر بخش ابھی زندہ ہے جسکے آباؤ اجداد نے زمین خریدی،  تمام دستاویزی ثبوت موجود ہیں جو عدالتی ریکارڈ کا حصہ بنائے جا سکتے ہیں، ہر شہری کا آئینی و قانونی حق ہے کہ انہیں کسی قبضہ مافیا سے بچا کر اسکی زمین واگزار کروائی جائے، عدالت سے استدعاہے کہ شریف خاندان کے قبضہ کی وجہ بھاری مالی نقصان اٹھانا پڑا، 5 ہزار کروڑ روپے کرایہ ادا کرنے اور متعلقہ تھانے کے ایس ایچ کو زمین کو واگزار کرانے کا حکم بھی دیا جائے۔

مزید :

صفحہ آخر -