پنشن اصلاحات،مشیر خزانہ  نے عالمی بینک سے تکنیکی معاونت کی درخواست کردی

  پنشن اصلاحات،مشیر خزانہ  نے عالمی بینک سے تکنیکی معاونت کی درخواست کردی

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں ) ورلڈ بینک کے نومنتخب کنٹری ڈائریکٹر کی ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ سے ملاقات ہوئی، اس موقع پر مشیر خزانہ نے پنشن اصلاحات میں ورلڈ بینک سے تکنیکی معاونت کی درخواست کر دی۔ اس موقع پر کنٹری ڈائریکٹر کا کہنا تھا کہ پاکستان میں اس وقت ورلڈ بینک کے 56 منصوبوں پر کام جاری ہے جس کی لاگت لگ بھگ 11 ارب ڈالر بنتی ہے۔ ان منصوبوں میں مالیاتی اصلاحات اور انسانی ترقی کے منصوبے بھی شامل ہیں۔مشیر خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ نے ورلڈ بینک کے تعاون کو سراہا اور کہا کہ کورونا کے باعث معاشی اصلاحات کا عمل سست ہوا تاہم حکومت نے معیشت کو مستحکم کیا۔ احساس پروگرام کے تحت ایک کروڑ 60 لاکھ غریب گھرانوں کی مدد جبکہ چھوٹے کاروبار کو سستے قرضے دیے گئے اور بجلی کے بلوں پر سبسڈی بھی دی گئی۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے مشیر خزانہ عبدالحفیظ شیخ نے پینش اصلاحات میں ورلڈ بینک کی تکنیکی معاونت کرنے کی درخواست بھی کی۔ واضع رہے کہ وبائی صورتحال کے دووران ورلڈ بینک نے 50 کروڑ ڈالر کی ہنگامی امداد دی تھی۔دوران ملاقات مشیر خزانہ نے مالی سال 19-2018ء  کے دوران ادائیگیوں میں عدم توازن کے بحران سے نمٹنے اور معیشت کو مستحکم بنانے کے لئے حکومت کی طرف سے کی گئی اصلاحات کو اجاگر کیا۔ کنٹری ڈائریکٹر ورلڈ بنک نے کہا ہے کہ کوروناء نمٹنے کیلئے حکومت کے اقدامات قابل ستائش ہیں۔

پنشن اصلاحات

مزید :

صفحہ اول -