پنجاب بھر میں شدید بارش، 17افراد جاں بحق، بیسیوں زخمی، صوبائی دارالحکومت کے بیشتر علاقوں میں پانی گھروں، دفاتر میں داخل 

    پنجاب بھر میں شدید بارش، 17افراد جاں بحق، بیسیوں زخمی، صوبائی دارالحکومت ...

  

 لاہور، ملتان، پنڈی،شیخوپورہ، پھالیہ، چنیوٹ( بیورو رپورٹس،نمائندگان)پنجاب کے مختلف علاقوں میں بارش کے باعث مکانات کی چھتیں اور مٹی کے تودے گرنے سے 17 افراد جاں بحق جب کہ متعدد زخمی ہوگئے۔ مطابق لاہور کے علاقے ہربنس پورہ کی ابراہیم کالونی میں مکان کی چھت گرنے سے 4 افراد جاں بحق اور خواتین سمیت 5 افراد زخمی ہو گئے، جاں بحق افراد کی شناخت صابر، کامران، اعظم اور اسلم کے نام سے ہوئی ہے جب کہ زخمیوں میں حبیب اللّٰہ، ساحل، قمر بی بی، فاطمہ اور فریدہ بی بی شامل ہیں۔شیخوپورہ میں مرید کے روڑ پر واقع ملیاں کلاں میں بارش کے باعث افتخار نامی شخص کے مکان کی چھت گرنے سے 9 افراد ملبے تلے دب گئے۔ واقعے میں ایک  5سالہ بچہ ہابیل افتخار،45سالہ خاتون صدف شہباز موقعہ پر ہی جان بحق ہوگئے جب کہ 7 زخمی ہوگئے۔جڑانوالہ کے تھانہ صدر کی حدود میں واقع گاؤں چک نمبر119 گ ب میں خستہ حال چھت گرنے سے ارشد نامی شخص جاں بحق ہوگیا۔ فیصل آباد میں کرنٹ لگنے کے مختلف واقعات میں 2 افراد زندگی کی بازی ہار گئے۔پھالیہ میں شدید بارش کے باعث مکان کی چھت گرنے سے ماں اور 4 بچے جاں بحق ہوگئے۔ جاں بحق ہونے والوں میں 33 سالہ رقیہ، 8 سالہ سارم معاویہ، 5 سالہ عاتکہ عافیہ، 3 سالہ محمد عمر اور 2 سالہ محمد حاشر شامل ہیں۔کلرکہار میں کوئلے کی کان پر کام کرنے والے افراد کان میں ہی بنے کمروں میں سور ہے تھے کہ بارش کے باعث ان پر مٹی کا تودا آن گرا جس کے نتیجے میں 3 افراد لقمہ اجل بن گئے۔ جاں بحق ہونے والوں میں اسحاق، شمشیر اور ارسلہ شامل ہیں۔وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار نے چھتیں گرنے کے واقعات پر اظہار افسوس کرتے ہوئے زخمی افراد کو علاج معالجے کی بہترین سہولتیں فراہم کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے انتظامیہ سے حادثات کی رپورٹ طلب کر لی۔ چنیوٹ میں بھی چھت گرنے سے 3 افراد زخمی ہوئے۔حافظ آباد کے نواحی گاؤں ساگر کلاں میں شدید بارش کے باعث مکان کی چھت گر گئی جس کے نتیجہ میں جوان سال بیٹا جاں بحق جبکہ باپ شدید ذخمی ہوگیا۔ تفصیلات کے مطابق محمد لیاقت اپنے بیٹے شاہزیب کے ہمراہ مکان کے ایک کمرہ میں سورہا تھا کہ شدید بارش کے باعث مکان کی چھت گرگئی جس کے نتیجہ میں بیٹا شاہزیب جاں بحق جبکہ باپ لیاقت شدید ذخمی ہوگیا۔ جسے ملبہ تلے نکال کر ہسپتال منتقل کردیا گیا۔چناب نگر میں مختلف چار واقعات میں بارش کے باعث گھر کی چھتیں گرنے سے ایک بچہ جاں بحق 7افراد زخمی تفصیلات کے مطابق مختلف چار واقعات میں بارش کے باعث 5سالہ طعیب ولد شیر علی جاں بحق جبکہ 2سالہ شعیب ولد شیر علی، 26سالہ صائمہ زوجہ شیر محمد، 10سالہ کاشف ولد شیر محمد،40سالہ محمد یونس ولد ہدایتعلی، 28سالہ اللہ دتہ ولد شیر، 40سالہ بشری بی بی زوجہ عبداللہ، 50سالہ نور بخت دختر شہامند زخمی ہو گئیں اطلاع ملنے پر ریسکیو 1122نے موقع پر پہنچ کر زخمی کو طبی امداد کے لئے ہسپتال منتقل کر دیا

 ہلاکتیں 

لاہور(لیڈی رپورٹر) صو با ئی دا رلحکو مت میں گزشتہ روز سات گھنٹوں تک جاری رہنے وا لی تیز بارش کے پا نی سے لاہور کی سڑکیں  ندیاں، چوک چوراہے تالاب کا منظر پیش کر نے لگے، گاڑیاں اور موٹرسائیکلیں خراب ہونے سے شہری سڑکوں پررل گئے، نشیبی علاقوں میں پانی گھروں میں داخل ہوگیا جبکہ شہر میں موسلادھار بارش کے بعد موسم خوشگوار ہوگیاگرمی اور حبس کا زور ٹوٹ گیا بارش کے بعد شہر کا درجہ حرارت 26 ڈگری سینٹی گریڈ ہوگیا،۔محکمہ موسمیات نے آئندہ دو روز تک مزید بارش کی پیشگوئی کی ہے۔ تفضیلا ت کے مطا بق بارش نے پورے لاہور کو جل تھل کر دیا ذرائع کے مطابق بارش سے ڈیوس روڈ اور گورنر ہاؤس کی عقبی سڑک ڈوب گئی، شادمان کا علاقہ اور والٹن روڈ بھی زیر آب آگئے، ریلوے روڈ اور برانڈرتھ روڈ مارکیٹ میں پانی جمع ہونے سے دکاندار کاروبار نہیں کھول سکے، بادامی باغ آٹو پارٹس مارکیٹ اور رحمان گلیاں مارکیٹ تالاب کے تاجر نکاسی آب کیلئے واسا عملے کے منتظر رہے۔۔جیل روڈ، مال روڈ، جوہر ٹاؤن، واپڈا ٹاؤن، ٹاؤن شپ، سبزہ زار، مرغزار کالونی، ہربنس پورہ، جلو موڑ، فتح گڑھ، تاج پورہ، لوئرمال، اسلام پورہ، گلشن راوی، فیروزپور روڈ، اچھرہ، جیل روڈ، شادمان، شاہ جمال، ریس کورس، گڑھی شاہو ڈیوس روڈ، گلبرگ اور ملحقہ علاقوں میں موسلادھار بارش ہوئی، نکاسی آب کے مسائل کی وجہ سے ٹریفک وارڈنز بھی جوتے اتار کر ڈیوٹی کرتے نظر آئے۔اولڈ کلب روڈ بھی پانی سے بھر گئی، شادمان میں انسٹی ٹیوٹ آف مینٹل ہیلتھ کی سڑک پر پانی کھڑا رہا، پانی کھڑا ہونے سے سڑک پر ٹریفک کی روانی بھی متاثر رہی جبکہ معمولی بارش سے گٹر بھی اْبلنے لگے، راہگیروں کو بھی آمدو رفت میں شدید مشکلات کا سامنا رہا۔ ڈیوس روڈ، گورنر ہاؤس اور ریلوے اسٹیشن کے اطراف میں بھی بارش کا پانی جمع ہوگیا، سڑکوں پر پانی جمع ہونے سے شہریوں کو آمدورفت میں دشواری کا سامنا رہا۔ سڑکوں پر پانی جمع ہونے سے ٹریفک کی روانی بھی متاثر ہوئی۔ محکمہ موسمیات کے مطا بق  جیل روڈ میں سب سے زیادہ 20 ملی میٹر، ایئرپورٹ پر 2، گلبرگ میں 9، لکشمی چوک میں 20، اپر مال پر18،مغلپورہ پر 17 اور تاج پورہ میں 19ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔ نشترٹاؤن میں 20، چوک ناخدا میں 11، پانی والا تالاب میں 16.5، فرخ آباد میں 14، گلشن راوی میں 14 اور اقبال ٹاؤن میں 11، سمن آباد 14، جوہر ٹاؤن میں 19 جبکہ پنجاب یونیورسٹی میں 16 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی ہے۔

لاہور بارش

مزید :

صفحہ اول -