ریسکیو ڈرائیوروں کے دوسرے شارٹ کورس کی تقریب حلف برداری 

  ریسکیو ڈرائیوروں کے دوسرے شارٹ کورس کی تقریب حلف برداری 

  

لاہور (کرائم رپورٹر)ایمرجنسی سروسز اکیڈمی میں 50 ریسکیو ڈرائیوروں پر مشتمل دوسرے شارٹ کورس کی حلف برداری کی تقریب منعقد ہوئی۔ تقریب کے مہمان خصوصی ڈائریکٹر جنرل پنجاب ایمرجنسی سروس ڈاکٹر رضوان نصیر نے گوجرانوالہ، حافظ آباد، لیہ اور فیصل آباد کیلئے منتخب ہونیوالے 50 ریسکیورڈرائیورز کو کورس کی کامیاب تکمیل پر حلف لیا ریسکیو ہیڈ کوارٹرزو ایمرجنسی سروسز اکیڈمی کے سینئر افسران اورریسکیورز کی ایک بڑی تعداد نے تقریب میں شرکت کی۔ ان ریسکیورز کو 4 ہفتوں پر مشتمل تربیتی شارٹ کورس کے دوران ایمرجنسی وہیکل،موٹر سائیکل چلانی کے ساتھ ساتھ روڈ سیفٹی اورحادثات میں مقامی لوگوں کی طرف سے ایمرجنسی رسپانس کیلئے کمیونٹی ایکشن کی تربیت دی گئی ہے۔اس موقع پر ڈاکٹر رضوان نصیر نے اظہار خیال کرتے ہوئے پیشہ وارانہ تربیت کی کامیاب تکمیل اور ریسکیو فیملی کا حصہ بننے پر ان ریسکیورز کو مبارکباد دی۔ انہوں نے مزید کہا کہ ریسکیو 1122 پنجاب نے اکتوبر 2004 میں اپنے آغاز کے بعد سے اب تک مختلف ایمرجنسیز، حادثات و سانحات میں 84لاکھ سے زائد متاثرین کوسروسز فراہم کی ہیں  پاکستان میں ضلع لاہور سے پائلٹ پروجیکٹ کے طور پر اس سروس کا آغاز کیا گیا اس سے پہلے پاکستان میں ایمرجنسی مینجمنٹ کا کوئی نظام موجود نہیں تھا۔ ریسکیو سروس کے ذریعے حکومت پنجاب دیگر صوبوں کو ایمرجنسی سروس کے اس زندگی بچانے والی ماڈل سروس کے قیام کیلئے تکنیکی مدد فراہم کررہی ہے۔ 

اب دیگر صوبوں کے شہریوں کو ہنگامی صورتحال میں سروسز فراہم کی جارہی ہیں۔مزید برآں ایمرجنسی سروسز اکیڈمی میں 2004 سے اب تک پنجاب، خیبر پختونخوا، گلگت بلتستان، آزاد جموں و کشمیر، بلوچستان اور کراچی کی امن فاو ¿نڈیشن کے لئے 19ہزار سے زائد ریسکیورز کو تربیت دی جاچکی ہے۔ اب ایمرجنسی سروسز اکیڈمی پاکستان کے تمام صوبوں کے ساتھ ساتھ جنوبی ایشیائی ممالک کے امدادی کارکنوں کو پیشہ ورانہ تربیت کی فراہمی کیلئے ایک عالمی معیارکاپلیٹ فارم بن گیا ہے۔ڈی جی ریسکیو پنجاب نیریسکیورڈرائیورز کو خصوصی تلقین کی کہ محتاط رہتے ہوئے ڈرائیو کریں اور ایمرجنسیز کو رسپانس کرتے ہوئے خاص طور پر محفوظ ڈرائیونگ کو یقینی بنائیں۔ کسی ایک کی زندگی بچانے کیلئے جاتے ہوئے راستے میں موجود درجنوں لوگوں کی زندگیوں کو داو ¿ پر نہیں لگایا جاسکتا۔ آپ ایک تربیت یافتہ اور پیشہ ورایمرجنسی رسپانڈر ہیں اورتربیت یافتہ ریسکیورز اپنے علاقے کیلئے رول ماڈل ہیں اسلئے نہ صرف اپنی کام کی جگہ بلکہ اپنے علاقے میں بھی سیفٹی کلچر کو فروغ دیں تاکہ محفوظ معاشرے کا قیام عمل میں لایا جاسکے۔

مزید :

علاقائی -