کراچی میں لسانی بنیادوں پر ضلع منظور نہیں،ایم کیو ایم 

  کراچی میں لسانی بنیادوں پر ضلع منظور نہیں،ایم کیو ایم 

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)پیپلز پارٹی نے پاکستان، سندھ اور کراچی کو ہمیشہ لسانی بنیادوں پر تقسیم کیا ہے، مشرقی پاکستان سے لیکر دیہی و شہری سندھ کوٹہ سسٹم تک اور اب کراچی میں لسانی بنیادوں پر ملیر کیماڑی ضلع کے قیام کے فیصلے تک پیپلز پارٹی کی متعصبانہ لسانی سوچ صاف ظاہر ہے،متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کی رابطہ کمیٹی نے کراچی میں سیاسی اور لسانی بنیادوں پر ایک اور ضلع کے اضافے کی سخت ترین الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ پیپلز پارٹی کی وڈیرہ شاہی حکومت کسی بھی قسم کی قانون سازی میں شہری سندھ اور کراچی کے منتخب نمائندوں سے مشاورت نہیں کرتی اور شہری سندھ سے منتخب نمائندوں کی گزارشات پر عمل درآمد نہیں ہوتا، پیپلز پارٹی اسمبلی میں مصنوعی عددی اکثریت اور جعلی مینڈیٹ کی غنڈہ گردی بند کرے۔ رابطہ کمیٹی نے کہا کہ کراچی کو پہلے ہی چھ ضلعوں میں تقسیم کر کے بلدیاتی انتظامیہ کو مفلوج بنا دیا گیا تھا اب ایک نیا ضلع بنا دیا گیا ہے تاکہ کراچی میں پیپلز پارٹی کا سیاست قائم رہے، پیپلز پارٹی نے اپنی سیاست زندہ رکھنے کیلئے کراچی کو بربادی کے دہانے پر لاکر کھڑا کردیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کراچی کے شہریوں کے ہاتھوں بری طرح مسترد ہونے کے بعد جبری طور پر کراچی کا کنٹرول حاصل کرنا چاہتی ہے، جب پیپلز پارٹی ساری جماعتوں کے ساتھ مل کر بھی  ڈسٹرکٹ ویسٹ میں ایم کیو ایم کو نہیں ہرا سکی تو ایسے اوچھے ہتھکنڈوں پر اتر آئی ہے۔ 

مزید :

صفحہ آخر -