ریشنلائزیشن، حکومت کے تعلیم کش  اقدامات پر ٹیچرز میں تشویش کی لہر

  ریشنلائزیشن، حکومت کے تعلیم کش  اقدامات پر ٹیچرز میں تشویش کی لہر

  

میلسی(سپیشل رپورٹر)   صوبائی وزیر تعلیم مراد راس نے پنجاب بھر(بقیہ نمبر45صفحہ6پر)

 کے سرکاری سکولوں میں ہزاروں اساتذہ کی ریشنلائزیشن کر دی ہے صوبہ کے ہر پرائمری سکول میں کم از کم 3 اساتذہ تعینات کرنے کی پالیسی اپنانے سے اساتذہ کی ان سکولوں میں شدید کمی پیدا ہونے کے ساتھ ساتھ لاکھوں طلباء و طالبات کی تعلیم بھی متاثر ہو گی قبل ازیں سابقہ صوبائی حکومت نے پرائمری سکولوں میں کم از کم 4 اساتذہ تعینات کرنے کی تعلیم کش پالیسی اپنائی تھی مگر موجودہ صوبائی وزیر تعلیم نے وزیر اعظم عمران خان کو کارکردگی دکھانے اور سرکاری خزانے کی نام نہاد بچت کے نام پر ہر سکول میں 4 کی بجائے 3 اساتذہ تعینات کرنے کی ناقص پالیسی لاگو کرنے پر قائل کیا حالانکہ پرائمری سکول میں 6 کلاسز ہوتی ہیں اس لحاظ سے ہر سکول میں کم از کم 6 اساتذہ کی تعیناتی ضروری ہے مگر موجودہ حکومت تنخواہوں اور دیگر فنڈز کی بچت کرنے کی آڑ میں فی سکول کم از کم 3 اساتذہ تعینات کرنے کی پالیسی پر عمل درآمد کر رہی ہے حکومت کے اس تعلیم کش اقدام سے نہ صرف لاکھوں بچوں کا تعلیمی نقصان ہوگا بلکہ عوام کا سرکاری سکولوں پر اعتماد ختم ہو جائے گا۔

لہر

مزید :

ملتان صفحہ آخر -