لاک ڈاون سے متاثرہ سکولز کو ریلیف پیکج دیا جائے،مشتاق سیماب

 لاک ڈاون سے متاثرہ سکولز کو ریلیف پیکج دیا جائے،مشتاق سیماب

  

مردان (بیورورپورٹ) پرائیویٹ سکولز منیجمنٹ ایسوسی ایشن /پین کے زیر اہتمام مردان کے تمام سیاسی جماعتوں، سماجی تنظیموں، تاجر برداری، وکلا اور سول سوسائٹی پر مشتمل آل پارٹیز کانفرنس زیر صدارت نصیر خان آفریدی منعقد ہوئی۔ آل پارٹیز کانفرنس کے شرکا ء نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ تمام سرکاری اور پرائیویٹ سکولز، کالجز، یونیورسٹیاں اور مدارس فی الفور کھول دیئے جائیں۔ کورونا کے دوران لاک ڈاون سے متاثرہ سکولز کو ریلیف پیکج دیا جائے۔ کم از کم چھ ماہ کا بلڈنگ کرایہ، اساتذہ کی تنخواہیں حکومت ادا کریں۔  سکولز کے چھ ماہ یوٹیلیٹی بلز اور ٹیکسز میں چھوٹ دی جائے۔ آل پارٹیز کانفرنس میں عوامی نیشنل پارٹی کے رہنما سابق ضلعی ناظم حمایت اللہ مایار، جماعت اسلامی کے نائب امیرضلع مشتاق سیماب، جمعیت علمائے اسلام کے جنرل سیکرٹری مولانا امانت شاہ، پاکستان مسلم لیگ ن کے نائب صدر سلیم گل دولت زئی، جے یو پی کے صوبائی صدر حاجی فیاض خان،ڈسٹرکٹ بار مردان کے جنرل سیکرٹری شفیق ایڈوکیٹ،  امن جرگہ کے صوبائی صدر سید کمال شاہ، جنرل سیکرٹری ارشد منان، مردان پریس کلب کے جنرل سیکرٹری ایم بشیر عادل، سابق نائب صدر ہدایت الرحمان ہوتی، چیمبر آف کامرس کے سینئیر نائب صدر حاجی اویس خان، وومن چیمبر کے صدر عقیلہ سنبل، مرکزی تنظیم تاجران ظاہر شاہ گروپ کے حاجی غلام سرور، آل پاکستان انٹرنیشنل ہیومن رائٹس کے ڈویژنل صدر رحیم زادہ باچہ، مردان یوتھ پارلیمنٹ کے چیئرمین ارشاد احمد،پرائیویٹ ایجوکیشن نیٹ ورک کے صوبائی نائب صدر اور ممبر پی ایس آر اے فضل اللہ دوادزئی، سول سوسائٹی کے رکن سابق ناظم ہمایون خلجی اورپی ایس ایم اے کے عماداکبر نے خطاب کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ حکومت تعلیمی ادارے کھولنے کا اعلان کریں۔ انہوں نے کہا کہ آل پاکستان پرائیویٹ سکولز کی جانب سے اعلان پر جو تعلیمی ادارے کھل گئے ہیں ان کو ایس او پیز کے مطابق درس و تدریس کا عمل جاری رکھنے کی اجازت دی جائے۔ حکومت تما م چھوٹے بڑے تعلیمی اداروں کے مسائل حل کریں۔ مقررین نے مردان انتظامیہ سے درخواست کی کہ اساتذہ معماران قوم ہیں لہذاکسی بھی سکول پرنسپل کو گرفتار نہ کیا جائے۔ اور نہ ہی کسی سکول کو سیل کیا جائے۔ سکولز بابت اگر انتظامیہ سے کوئی شکایت ہو تو وہ براہ راست سکولز ایسوسی ایشن کے صدر کے ساتھ رابطہ کرکے افہام وتفہیم سے مسئلہ حل کریں۔ شرکا نے کہا کہ موجود وقت میں اساتذہ کرام سخت کرب میں مبتلا ہے ان کے لئے حکومت کم از کم چھ ماہ کے تنخواہ سرکاری سطح پر اد ا کرنے کا اعلان کریں۔ آل پارٹیز کانفرنس کے شرکا نے اس بات پر سخت تشویش کا اظہار بھی کیا کہ حکومت کی طرف سے سکولز کھولنے کے تاریخ بار بار تبدیل کیا جارہا ہے۔ جس سے بے چینی پیدا ہوتی ہے۔  کرونا کی وجہ سے زیادہ لوگوں کا کاروبار متاثر ہو گیا ہے۔ جس کی وجہ سے اساتذہ فاقہ کشی اور خود کشی پر مجبور ہیں۔ حکومت کو حالات کا ادراک کرتے ہوئے ایلیمنٹری ایجوکیشن فاونڈیشن اور فرنٹئیرایجوکیشن فاونڈیشن میں موجود اربوں روپے سے پرائیویٹ سکولز کے لئے ریلیف دیا جائے۔ س موقع پر تمام سیاسی قیادت کی  مشاورت سے  ایکشن کمیٹی تشکیل دی گئی جو کہ باہمی مشاوت سے سکولز کھولنے اور آئندہ کا لائحہ عمل طے کرے گی۔ کمیٹی میں مردان کے نامور وکلا? صاحبان والدین اساتذہ اور دیگر شخصیات موجود ہوں گے جو کہ سکول کے مسائل حل کرنے میں اپنا کردار اداکریں گے۔کمیٹی کے کنوینر مشتاق سیماب مقرر کئے گئے جبکہ کمیٹی کے دیگر اراکین میں عوامی نیشنل پارٹی کے رہنما سابق ضلعی ناظم حمایت اللہ مایار، جمعیت علمائے اسلام کے مولانا امانت شاہ، پاکستان مسلم لیگ ن کے سلیم گل دولت زئی، جے یو پی کے حاجی فیاض خان،ڈسٹرکٹ بار مردان کے شفیق ایڈوکیٹ،  امن جرگہ کے ارشد منان، مردان پریس کلب بشیر عادل، چیمبر آف کامرس کے سینئیر نائب صدر حاجی اویس خان، وومن چیمبر کے صدر عقیلہ سنبل، مرکزی تنظیم تاجران ظاہر شاہ گروپ کے حاجی غلام سرور، (احسان باچہ گروپ) کے حاجی پرویز، آل پاکستان انٹرنیشنل ہیومن رائٹس کے ڈویژنل صدر رحیم زادہ باچہ، مردان یوتھ پارلیمنٹ کے چئیرمین ارشاد احمد،الیکٹرانک میڈیا کے قاری منظورحسین،  سول سوسائیٹی سے سابق ناظم ہمایون خلجی اورپی ایس ایم اے کے طفیل مایار شامل ہوں گے۔ کمیٹی آئندہ دو روز میں ڈپٹی کمشنر مردان، ڈی پی او مردان، مردان کے تمام منتخب ایم این ایز اور ایم پی ایز کے ساتھ ملاقات کرے گی اور موجودہ صورتحال پر اپنے مطالبات سے آگاہ کرے گی۔ پی ایس ایم اے کے پلیٹ فارم سے ایجوکیشن کانفرنس کا انعقاد بھی کیا جائے گا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -