ایک ہی موج میں بہا ہُوں میں

ایک ہی موج میں بہا ہُوں میں
ایک ہی موج میں بہا ہُوں میں

  

ایک ہی موج میں بہا ہُوں میںAik Hi Moj Men Men BAha Hun Main

اور اُس پار جا لگا ہُوں میںAor Uss Paas Ja Laga Hun Main

نیند آتی ہے یا نہیں آتی Neend Aati  Hay Ya Nahen Aati

اَلغرض خواب دیکھتا ہُوں میں Algharaz Khaab Dekhta Hun Main

خواب میں ہاتھ تھامنے والے Khaab Men Haath Thaamnay Waalay

دیکھ، بستر سے گِر پڑا ہُوں میںDekh Bistar Say Gir Parra Hun Main

دل میں ایسی شِکست و ریخت ہے اب Dil Men Aisi Shikast o Rekht HAy Ab

ہر کِھلونا خریدتا ہُوں میں Har Khilona Kahreedta HUn Main

کیوں قدم اُٹھ رہے ہیں عُجلت میں  KIun Qadam Uth Rahay Hen Ujlat Men

کیا بہت پیچھے رہ گیا ہُوں میں Kia Bahut Peechay Reh Gia Hun Main

اِک طرف دوش، اِک طرف فردا Ik Taraf Dosh, ik Traf  Farda

درمیاں سے گُزر رہا ہُوں میںDrmiaan Say Guzar Raha Hun Main

شاعر: لیاقت علی عاصم

مزید :

شاعری -سنجیدہ شاعری -غمگین شاعری -