عتیقہ اوڑھو شراب کیس، عدالت نے 9 سال بعد فیصلہ سنادیا

عتیقہ اوڑھو شراب کیس، عدالت نے 9 سال بعد فیصلہ سنادیا
عتیقہ اوڑھو شراب کیس، عدالت نے 9 سال بعد فیصلہ سنادیا

  

راولپنڈی (ڈیلی پاکستان آن لائن)  سول عدالت نے اداکارہ عتیقہ اوڑھو کو شراب برآمدگی کیس میں 9 سال بعد بری کردیا۔

راولپنڈی کی سول عدالت نے جمعہ کو عتیقہ اوڑھو شراب برآمدگی کیس کا فیصلہ سنایا۔ اس کیس کا فیصلہ ہونے میں 9 سال 2 ماہ اور 14 روز لگے۔ عدالت نے اداکارہ عتیقہ اوڑھو کو 2 بوتل شراب کی برآمدگی کے کیس میں باعزت بری کردیا۔

سول جج یاسر چوہدری نے فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ اداکارہ کے خلاف کوئی ثبوت نہیں ملا اس لیے انہیں بری کیا جاتا ہے۔ خیال رہے کہ اداکارہ عتیقہ اوڑھو پر الزام تھا کہ ان سے اسلام آباد ایئر پورٹ پر 2 بوتل شراب برآمد ہوئی ہے ۔ 2011 میں اس وقت کے چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری نے اس معاملے پر از خود نوٹس لیا تھا۔ عتیقہ اوڑھو شراب برآمدگی کیس میں 9 سال کے عرصے میں 210 پیشیاں ہوئیں اور 16 جج تبدیل ہوئے۔

مزید :

تفریح -