گھر سے پیپر دینے نکلی ہندو لڑکی کی کئی روز بعد ویڈیو سامنے آگئی، ایسی بات بتادی کہ گھر والے تھانے پہنچ گئے

 گھر سے پیپر دینے نکلی ہندو لڑکی کی کئی روز بعد ویڈیو سامنے آگئی، ایسی بات ...
 گھر سے پیپر دینے نکلی ہندو لڑکی کی کئی روز بعد ویڈیو سامنے آگئی، ایسی بات بتادی کہ گھر والے تھانے پہنچ گئے

  

کانپور (ڈیلی پاکستان آن لائن) بھارتی ریاست اتر پردیش میں ایک ہندو لڑکی نے اسلام قبول کرکے مسلمان لڑکے سے شادی کرلی، گھر والوں کو اس کی خبر ملی تو انہوں نے اسے "لوجہاد" کا نام دے کر دولہا کے خلاف مقدمہ درج کرادیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق 29 جون کو 22 سالہ شالنی پیپر دینے کیلئے لکھنؤ گئی لیکن لاپتا ہوگئی۔ گھر والوں نے اسے بہت ڈھونڈا مگر اس کا کوئی سراغ نہیں ملا جس پر پولیس کو لڑکی کی گمشدگی کی رپورٹ درج کرادی گئی۔

تقریباً ڈیڑھ مہینے کی خاموشی کے بعد 8 اگست کو شالنی نے اپنی فیس بک پر ایک ویڈیو اپ لوڈ کی جس میں اس نے بتایا کہ اس نے محمد فیصل نامی نوجوان سے اسلام قبول کرکے شادی کرلی ہے اور اپنا نام تبدیل کرکے فضا فاطمہ رکھ لیا۔

ویڈیو سامنے آنے کے بعد  لڑکی کے گھر والے تھانے پہنچ گئے اور دولہا کے خلاف لو جہاد اور اغوا کا الزام لگاتے ہوئے اس پر مقدمہ درج کرادیا۔ دوسری جانب لڑکی نے اپنے شوہر کے ساتھ ایک اور ویڈیو جاری کرکے تحفظ کی اپیل کی ہے اور کہا ہے اسے اور اس کے شوہر کو اپنے گھر والوں سے جان کا خطرہ ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -