آپریشن ضرب عضب کے باعث دہشتگرد افغانستان منتقل ہو چکے ہیں ، پاکستان

آپریشن ضرب عضب کے باعث دہشتگرد افغانستان منتقل ہو چکے ہیں ، پاکستان

 نیویارک(اے این این) پاکستان نے اپنی سرزمین پرطالبان کے دوبارہ منظم ہونے کے بارے میں افغانستان کے الزام کوسختی سے مسترد کرتے ہوئے ہمسایہ ملک کو باور کرایا گیا ہے کہ پاک فوج کے کامیاب آپریشن ضرب عضب کے باعث دہشت گردوں کے ٹھکانے سرحدپارمنتقل ہوچکے ہیں جبکہ افغانستان میں تشدد کے واقعات میں اضافے کے اسباب خارجی نہیں بلکہ داخلی ہیں ،افغان مفاہمتی عمل کے نتائج برآمدنہ ہونے کاذمہ داری کسی دوسرے کونہیں ٹھہرایاجاسکتا۔ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں افغانستان کی صورتحال پر مباحثے میں اظہار خیال کرتے ہوئے عالمی ادارے کیلئے پاکستان کے قائم مقام مستقل مندوب نبیل منیر نے کہاکہ افغانستان کایہ الزا م مکمل طورپربے بنیادہے کہ طالبان موسم سرما کے دوران پاکستان میں دوبارہ منظم ہورہے ہیں۔انہوں نے واضح کیاکہ کامیاب آپریشن ضرب عضب کے باعث دہشت گردوں کے ٹھکانے افغانستان منتقل ہوگئے ہیں اوراس آپریشن کے نتائج کا عالمی برادری نے برملا اعتراف کیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ افغانستان میں تشدد کے واقعات میں اضافے کے اسباب خارجی نہیں بلکہ ملک کے اندر ہی موجود ہیں۔ انہوں نے کہاکہ افغانستان کے شورش زدہ علاقوں میں بڑی تعداد میں دہشت گرد گروپوں و تنظیموں کی موجودگی نہ صرف افغانستان بلکہ ہمسایہ ملکوں کے دیر پا استحکام کے لئے مسلسل چیلنج ہے۔ انہوں نے تمام دہشت گردی کے پورے ڈھانچے کے خاتمے کے حوالے سے پاکستان کے عزم کا اعادہ بھی کیا۔ انہوں نے کہاکہ افغانستان میں امن و مفاہمت کے عمل کے نتائج ابھی تک برآمد نہیں ہوئے لیکن اس کا ذمہ دار پاکستان کو نہیں ٹھہرایا جاسکتا۔نبیل منیر نے کہاکہ پاکستان لاکھوں افغان پناہ گزینوں کی میزبانی کررہا ہے اور ان کی باوقار واپسی کیلئے پرعزم ہے۔

پا کستا ن

B

مزید : علاقائی