آدم جی لائف کا دی سٹیزن فاؤنڈیشن کیلئے 20لاکھ روپے کا عطیہ

آدم جی لائف کا دی سٹیزن فاؤنڈیشن کیلئے 20لاکھ روپے کا عطیہ

کراچی(اسٹاف رپورٹر) پاکستان بھر میں بچوں کی تعلیم کیلئے فنڈ اکھٹاکرنے کے مقصد کے تحت آدم جی لائف نے #EnsureASmile ڈیجیٹل مہم کے ذریعے دی سٹیزن فاؤنڈیشن (TCF) کیلئے 20لاکھ روپے کے فنڈز فراہم کرنے کا اعلان کیا ہے ۔آدم جی لائف نے سوشل میڈیا اور ڈیجیٹل کے استعمال میں اضافہ کو مدنظر رکھتے ہوئے #EnsureALifeکے ہیش ٹیگ سے ڈیجیٹل مہم متعارف کرائی ہے جس میں آدم جی لائف کی جانب سے متعلقہ ہیش ٹیگ کو ایک بارفیس بک ، ٹوئٹر پر شیئر کرنے یاری ٹوئٹ کرنے پر دی سٹیزن فاؤنڈیشن کو دس روپے وقف کئے گئے کا عطیہ کیا گیا ۔شرکاء کو اپنی تصاویر اپ لوڈ کرنے کا آپشن بھی فراہم کیا گیا تاکہ وہ حصہ لینے والے دیگرشرکاء کیلئے اس مہم کوپرُ لطف اور انٹریکٹو بناسکیں۔آدم جی لائف کے چیف اسٹریٹجی آفیسر جہانزیب ظفر نے کہا،’’یہ مہم پاکستان میں کسی بھی کمپنی کی جانب سے شروع کی جانے والی سب سے منفرد سی ایس آر کیمپین میں سے ایک ہے۔ تقریباً 2کروڑ 40لاکھ سے زائدبچے مختلف سماجی و اقتصادی عوامل کی وجہ سے اسکول جانے سے محروم ہیں اور آدم جی لائف نے اس مسئلے کے بارے میں شعور اجاگر کرنے کیلئے دی سٹیزن فاؤنڈیشن کے ساتھ معاہدہ کیا ہے۔ہم دورِجدید سے ہم آہنگ ہونے کیلئے ڈیجیٹل اقدام کے ساتھ جانے کیلئے پرعزم ہیں اور اس بات کو یقینی بنارہے ہیں کہ ملک میں موجود آن گراؤنڈ اور ڈیجیٹل سامعین کے درمیان آگاہی پیدا کرسکیں۔‘‘یہ مہم سوشل میڈیا پر وائرل ہوچکی ہے جس میں آدم جی لائف کی جانب سے مشہور شخصیات کواس مہم کے بارے میںآگاہی فراہم کرنے کا چیلنج قبول کرنے کی حوصلہ افزائی کی گئی ہے۔اس مہم میں متعدد مشہور شخصیات نے بھرپورطریقہ سے حصہ لیا جن میں ژالے سرحدی، فیصل قریشی، ساجد حسن اور نادیہ حسین شامل ہیں۔چند شرکاء Smile چیلنج کا بھی حصہ بنے جس میں انہوں نے اپنے ویڈیو کلپ اپ لوڈ کرکے مہم کے بارے میں وضاحت پیش کی اور دوسروں کوبھی اس مہم میں شامل ہونے کی دعوت دی ۔دی سٹیزن فاؤنڈیشن کے وائس پریذیڈنٹ ضیاء عباس نے کہا ،’’ہمیں بے حد خوشی ہے کہ آدم جی لائف نے سی ایس آر پارٹنر کے طور پر دی سٹیزن داؤنڈیشن کا انتخاب کیا اور تعلیم کی فراہمی کو ممکن بنانے کے ہمارے عزم کو مزید تقویت بخشی ہے ۔ہماری اس مہم کو سپورٹ کرنے سے ایسے بچوں کے چہروں پر مسکراہٹیں بکھیرنے میں مدد ملے گی جنہیں کبھی کلاس روم کواندر سے دیکھنے کا موقع نہیں ملا۔ مجھے یقین ہے کہ ہمارے اسکولوں میں مہیا کیا جانے والا تعلیم کا معیاران نوجوان ذہنوں کو مستقبل کا معمار بننے کیلئے ان کی حوصلہ افزائی کرے گا۔‘‘آدم جی لائف سماجی طور پر ایک باشعور ادارہ ہے جو تبدیلی لانے کا ارادہ رکھتا ہے۔ہمیں امید ہے کہ ہم اس اقدام کو آئندہ سالوں میں جاری رکھیں گے اور پاکستان کے غیر مراعات یافتہ بچوں کو صحت وتعلیم کی بنیادی سہولیات فراہم کرنے کیلئے دیگر این جی اوز کے ساتھ کام کریں گے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر