ویونگ اینڈ فنشنگ انسٹیٹیوٹ شاہدرہ کیمپس کی فیصل آباد منتقلی کا نوٹیفکیشن واپس لے لیا گیا

ویونگ اینڈ فنشنگ انسٹیٹیوٹ شاہدرہ کیمپس کی فیصل آباد منتقلی کا نوٹیفکیشن ...

  

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر)روزنامہ پاکستان کا اعزاز،خبریں اور رپورٹس چھپنے کے بعد حکومت کی طرف سے گورنمنٹ ویونگ اینڈ فنشنگ انسٹیوٹ شاہدرہ کیمپس کی جگہ پر لاری اڈا بنانے اور مذکورہ ادارے کو فیصل آباد منتقل کرنے کا فیصلہ واپس لے لیا گیا ۔حکومت نے 1922سے شاہدرہ میں قائم گورنمنٹ ویونگ اینڈ فنشنگ انسٹیٹیوٹ شاہدرہ کیمپس کو چند برس قبل لاہور سے فیصل آبادمنتقل کر نے کا منصوبہ بنایا تھا جس پر اہل علاقہ نے شدید احتجاج کیا تھا ۔واضح رہے کہ راوی ویلفئیر سوسائٹی شاہدرہ نے اس وقت عوام کے اس اہم مسئلے پر شدید احتجاج کیا تھا اور روزنامہ پاکستان نے عوام کی امنگوں کی ترجمانی کرتے ہوئے اس اہم عوامی ایشو کو اپنی خبروں کے ذریعے بھر پور کوریج دی تھی جس کے بعد اب حکومت کو اپنا فیصلہ واپس لینا پڑا ۔اس ضمن میں صدر راوی ویلفئیر سوسائٹی راحت محمود گجر نے روزنامہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ گورنمنٹ ویونگ اینڈ فنشنگ انسٹیوٹ شاہدرہ کیمپس وہ واحد فنی تعلیمی ادارہ ہے کہ جو پاکستان اور بھارت میں علیحدگی کے وقت پاکستان کے حصے میں آیا تھا ۔راحت محمود گجر نے اس اہم عوامی مسئلے کو اجاگر کرنے کے لئے روزنامہ پاکستان کی انتظامیہ کا شکریہ اداکیا ۔انہوں نے کہا کہ بظاہر موجودہ گورنمنٹ نے کالج کو فیصل آباد منتقل کرنے کا فیصلہ واپس لے لیا ہے ۔ لیکن ہمارا مطالبہ ہے کہ انسٹی ٹیوٹ کو چلانے کے لئے فوری طور پر عملہ تعینات کیا جائے ،فیصل آباد منتقل کی جانے والی کالج مشینری کو فوری طور پر واپس لایا جائے۔مزید براں گورنمنٹ ویونگ اینڈ فنشنگ انسٹی ٹیوٹ شاہدرہ کیمپس میں ٹیکسٹائل ڈائینگ اینڈ پرنٹنگ ،سرٹیفکیٹ ان کمپیوٹر اپلیکیشن ،فیشن ڈیزائننگ اور آٹو کیڈ میں داخلوں کے لئے نئے شیڈول کا اعلان کر دیا گیا ہے۔ کالج انتظامیہ کے مطابق کالج میں کلاسز کا اجراء 15 جنوری 2018سے شروع ہو جائے گا ۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -