وزیر اعظم بنانے کی پیشکش ہوئی ، مفادعامہ کے منصوبوں کو ادھورا چھوڑ کر اسلام آباد نہیں جا سکتا : شہباز شریف

وزیر اعظم بنانے کی پیشکش ہوئی ، مفادعامہ کے منصوبوں کو ادھورا چھوڑ کر اسلام ...

  

لاہور)جنرل رپورٹر)وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کہا ہے کہ عوام کو حفظان صحت کے اصولوں کے مطابق معیاری خوراک کی فراہمی حکومت کی ذمہ داری ہے اورمعاشرے کو بھی اس سلسلے میں اپنا کردارادا کرنا ہے ۔معیاری اورخالص غذا کی اہمیت کو اجاگر کر کے اس ضمن میں موثر اقدامات کے ذریعے مقاصد حاصل کیے جاسکتے ہیں۔انسانی صحت سے زیادہ کوئی چیز اہم نہیں، عوام کو معیاری اشیاء خوردونوش کی فراہمی کیلئے جتنے وسائل درکار ہیں دیں گے۔ حکومت نے عوام کو معیاری خوراک کی فراہمی یقینی بنانے کے حوالے سے پنجاب فوڈ اتھارٹی جیسا مایہ ناز ادارہ بنایا ہے اورعوامی خدمت کے حوالے سے اس ادارے کی جتنی بھی ستائش کی جائے کم ہے ۔انہوں نے کہا کہ جب نوازشریف کے خلاف فیصلہ آیا تو مجھے وزیراعظم بنانے کی پیشکش ہوئی، میں نے درخواست کی کے مجھے پنجاب میں رہنے دیں کیونکہ میرا عوام سے وعدہ ہے کہ ان کیلئے منصوبے مکمل کرنے ہیں،میں مفاد عامہ کے منصوبوں کو ادھورہ چھوڑ کر اسلام آبادنہیں جاسکتا،وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے ان خیالات کااظہار مقامی ہوٹل میں انٹرنیشنل فوڈ سیفٹی نیوٹریشن سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔وزیراعلیٰ نے سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میں اسلام آباد میں ایک اجلاس کو ختم کر کے اس اہم مجلس میں شرکت کیلئے یہاں پہنچا ہوں،اس سیمینار کی بے حد اہمیت ہے اوراگر میں اس میں شرکت سے محروم رہتا تو یہ غلط پیغام جاسکتا تھا کہ پنجاب فوڈ اتھارٹی عوام کو معیاری اشیاء خوردونوش کی فراہمی کیلئے مصروف عمل ہے لیکن وزیراعلیٰ پنجاب اس اہم محفل میں موجود نہیں ۔انہوں نے کہا کہ پنجاب فوڈ اتھارٹی جیسے ادارے کے قیام میں9سال کی کاوشیں شامل ہیں کیونکہ اس حوالے سے نہ تو کوئی قانون تھا اورنہ ہی اس بارے میں زیادہ آگاہی اور شعورموجود تھا۔عوام کو معیاری اشیاء خوردونوش کی فراہمی ایک بڑے محاذ کی حیثیت رکھتی تھی اور پنجاب حکومت نے اس کا بیڑہ اٹھایا ۔سکولوں، کالجوں، اداروں ،ہوٹلوں،ریستورانوں،چھابڑی فروشوں کوآگاہی دینا ضروری ہے ۔اس کا احاطہ کیے بغیر اچھی اورآلودگی سے پاک غذا کی فراہمی کا تصور بھی نہیں کیا جاسکتا۔ترکی،سعودی عرب،ایران،ملیشیاء جیسے اسلامی ممالک کی مثالیں ہمارے سامنے ہیں جنہوں نے خوراک کے اعلی معیار مقرر کررکھے ہیں۔ہم نے پنجاب میں اس کی شروعات کی ہیں اورپنجاب فوڈ اتھارٹی نے اس حوالے سے بے مثال کردارادا کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم نے فوڈ اتھارٹی کو اس سال 2ارب 70کروڑ روپے کے فنڈ دےئے ہیں،اگر اس ادارے کو عوام کو معیاری اشیاء خوردونوش کی فراہمی کیلئے 20ارب روپے کے فنڈ بھی درکار ہیں تو دیں گے۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ پاکستان میں بدقسمتی سے طبقاتی کشمکش موجود ہے،یہاں امیرامیر تر اورغریب غریب تر ہے۔اشرافیہ تو معیاری ریستورانوں میں اچھے اورمعیاری کھانوں سے لطف اندوز ہوتے ہیں جبکہ اس ملک کی بڑی آبادی چھابڑی فروشوں،چھوٹے ہوٹلوں اورچھوٹی دکانوں سے اپنی اشیاء ضروریہ حاصل کرتے ہیں ۔جہاں گزشتہ 70سالوں سے ان غریب عوام سے ڈنڈی ماری جارہی ہے ۔انہوں نے کہاکہ ترقی یافتہ ممالک میں کھلے دودھ کی فروخت کا تصور نہیں کیا جاسکتا۔بھارت اگر چہ ہمارا مخالف ہے لیکن وہاں بھی عوام کوحفظان صحت کے اصولوں کے مطابق پیکنگ میں بہترین دودھ ملتا ہے ۔ترقی یافتہ ممالک میں خوراک کے حوالے سے قوانین کا احترام کیا جاتا ہے ،ہم نے اس سلسلے میں بہت وقت ضائع کیا ہے ۔پنجاب حکومت نے پنجاب فوڈ اتھارٹی جیسا اہم ادارہ قائم کر کے اس سلسلے میں شروعات کی ہیں اب ہمیں اس کلچر کو صرف لاہور یا پنجاب تک ہی نہیں بلکہ پورے پاکستان میں پھیلانا ہوگا۔بھر پور آگاہی مہم کے ذریعے عوام میں احساس ذمہ داری اورقانون کی عملداری کو اجاگر کرنا ہے۔سزا اورجزا کے موثر نظام کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب فوڈ اتھارٹی کی لیب کی طرح پنجاب فوڈ ایگریکلچر ڈرگ ٹیسٹنگ لیب اتھارٹی بھی بنائی گئی ہے،جہاں خوراک ،ادویات اورزرعی اشیاء کی چیکنگ کا مربوط نظام ہوگا،یہ لیب پنجاب فرانزک سائنس ایجنسی کے قریب بنائی جارہی ہے اوریہ لیب بھی سٹیٹ آف دی آرٹ ہوگی۔ حکومت نے لاہور میں جدید ڈرگ ٹیسٹنگ لیب بھی بنائی ہے اوراس کے عملے کو برطانیہ اورترکی سے تربیت دلائی گئی ہے اور یہ لیب دنیا کی اچھی لیبز کے ہم پلہ ہے ۔تحریک انصاف نے اس عظیم منصوبے کی مخالفت کی درحقیقت پی ٹی آئی نے اس منصوبے میں 22ماہ کی تاخیر پیدا کر کے میری نہیں بلکہ غریب عوام کی مخالفت کی ہے ۔منصوبے میں 22ماہ کی تاخیر کر کے تحریک انصاف نے غریب مزدوروں کے ارمانوں کا خون اورپاکستان کا نقصان کیا۔کیا یہ تحریک انصاف کا انصاف ہے ؟ خداراایسی سیاست سے باز آئیں۔اگر آپ کے پاس لمبی گاڑیاں ہیں تو غریب عوام کی بازعزت سواری کی مخالفت نہ کریں۔اس اورنج لائن میٹروٹرین نے 25دسمبر کو چلنا تھا اورلاکھوں لوگوں نے روزانہ اس پر سفر کرنا تھالیکن پی ٹی آئی نے اس میں 22ماہ کی تاخیر کر کے پاکستان کے عوام کا نقصان کیا ہے ۔ان لوگوں نے اورنج لائن میٹروٹرین کے منصوبے کی مخالفت شاید اس لئے کی کہ اگر یہ ٹرین چل پڑی تو مسلم لیگ(ن) لاہور سے تمام سیٹیں جیت لے گی۔نیازی صاحب یاد رکھیں ہمیشہ جیت عوامی خدمت کی سیاست کی ہوتی ہے اورانشاء اللہ مسلم لیگ(ن) آئندہ انتخابات میں بھر پور کامیابی حاصل کرے گی۔مجھے عوام کی محبت ،خوشحالی اورترقی عزیز ہے ۔وزرات عظمی آنی جانی چیز ہے ۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ قومیں محنت،امانت اوردیانت سے بنتی ہیں۔پاکستان قائداعظمؒ کی عظیم تخلیق ہے اوراگر ہم من حیث القوم اسے عظیم مملکت بنانے کا فیصلہ کرلیں تو کوئی پہاڑ اور سمندر راستے میں حائل نہیں ہوسکتا۔انہوں نے کہا کہ محنت اورایمانداری سے کام کر کے پاکستان کو عظیم سے عظیم تر ملک بناناہے۔انشاء اللہ پاکستان اپنی منزل ضرور حاصل کرے گا اورقائدؒ کے افکار کے مطابق اسلامی فلاحی ریاست بنے گا۔قبل ازیں چےئرمین پنجاب فوڈ اتھارٹی عامر ہراج نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب فوڈ اتھارٹی کے قیام کا کریڈٹ وزیراعلیٰ شہبازشریف کو جاتا ہے اوریہ ادارہ ان کے ویژن کے مطابق کام کررہا ہے۔ڈائریکٹر جنرل پنجاب فوڈ اتھارٹی نورالاامین مینگل نے کہا کہ ادارے کے اغراض و مقاصد پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ اس ادارے کا دائرہ پنجاب کے تمام اضلاع تک بڑھا دیاگیا ہے اوررواں سال کے آخرتک پنجاب کے تمام اضلاع میں ٹریننگ سکول فعال کردےئے جائیں گے۔انہوں نے کہا کہ پنجاب فوڈ اتھارٹی وزیراعلیٰ پنجاب کے ویژن کے مطابق محافظ خوراک کا موثر کردارادا کررہا ہے ۔انہوں نے ادارے کی کارکردگی پر بھی روشنی ڈالی۔وزیراعلیٰ نے پنجاب فوڈ اتھارٹی کے اداروں میں تربیت مکمل کرنے والے طلباء و طالبات میں ایوارڈز بھی تقسیم کیے۔صوبائی وزراء رانا ثناء اللہ خان،رانا مشہود ،بلال یاسین،خیبر پختونخواہ کے ڈی جی فوڈ اتھارٹی ،صعنتکاروں،طلباء و طالبات ،چیمبر کے عہدیداروں اورمختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد کی بڑی تعداد نے تقریب میں شرکت کی۔

شہباز شریف

لاہور(جنرل رپورٹر)وزیراعلیٰ پنجاب محمدشہبازشریف نے برکی روڈ پر انفارمیشن ٹیکنالوجی یونیورسٹی کے مین کیمپس کا سنگ بنیاد رکھا۔ وزیراعلی نے سنگ بنیاد رکھنے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ پاکستان کی تاریخ کا یہ عظیم موقع ہے جب ہم نے انفارمیشن ٹیکنالوجی یونیورسٹی کے مین کیمپس کا سنگ بنیاد رکھا ہے۔چند برس قبل انفارمیشن ٹیکنالوجی یونیورسٹی ارفع کریم ٹاور میں قائم کی گئی تھی اور آج اس عظیم درسگاہ کے مین کیمپس کا سنگ بنیادبرکی روڈ پر اربوں روپے کی قیمتی اراضی پر رکھا گیاہے جس پر میں وائس چانسلر ڈاکٹر عمر سیف ، فیکلٹی ممبران اور طلبا وطالبات کو مبارکباد پیش کرتا ہوں ۔وزیراعلی نے چند روز قبل کانووکیشن میں ڈگریاں حاصل کرنے و الے طلبا وطالبات، ان کے اساتذہ اور والدین کو مبار کباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب حکومت نے انفارمیشن ٹیکنالوجی یونیورسٹی نوجوانوں کو اعلی تعلیم کی فراہمی کے لئے قائم کی ہے جہاں پر ذہین اور محنتی طلبا وطالبات کو وظائف بھی دئیے جاتے ہیں۔یہاں پر غریب کا بچہ بھی عزت سے تعلیم حاصل کرتاہے۔ انفارمیشن ٹیکنالوجی یونیورسٹی قائداعظم محمد علی جناح ؒ کے ویژن کو آ گے لے کر چل رہی ہے کیونکہ قائد اعظم محمد علی جناحؒ نے پاکستان اس لئے بنایا تھاکہ یہاں سب کو رنگ و نسل کے بغیر یکساں حقوق حاصل ہوں، امیر اور غریب کو تعلیم ،صحت اور ترقی کے یکساں مواقع ملیں لیکن بد قسمتی سے پاکستان میں امیر امیر تر اور غریب غریب تر ہوتا گیا۔آج امیر کی چوکھٹ پر تمام نعمتیں سلام کرتی ہیں اور انہیں تعلیم ، صحت او ردیگر سہولتیں حاصل ہیں لیکن غریب کے لئے تعلیم ،صحت اور دیگر سہولتیں نا پید ہیں۔امیر اور غریب میں تفاوت کے باعث پاکستان ترقی اور خوشحالی کی وہ منازل طے نہیں کر سکا جو دیگر ممالک نے طے کی ہیں۔پنجاب حکومت انفارمیشن ٹیکنالوجی یونیورسٹی کا مین کیمپس 183ایکڑ اراضی پر بنا رہی ہے ۔کچھ عرصہ قبل یہ قیمتی اراضی قبضہ گروپوں کے پاس تھی، پنجاب حکومت نے سپریم کورٹ سے یہ کیس جیتا اور اربوں روپے کی یہ قیمتی اراضی آپ کے قدموں میں نچھاور کر دی ہے تاکہ آپ بہترین تعلیم حاصل کر سکیں۔ انہوں نے کہاکہ ماضی میں ایسے کئی ادوارگزرے ہیں جہاں اس طرح کی اربوں روپے کی اراضی کو نوجوانوں کے استعمال میں لانے کی بجائے آپس میں بندر بانٹ کر لی گئی، انہوں نے کہاکہ جتنے بھی وسائل آپ کو چا ہیے میں دوں گا ۔پنجاب حکومت لاہور میں سٹیٹ آف دی آرٹ پاکستان کڈنی اینڈ لیور ٹرانسپلانٹ انسٹی ٹیوٹ بنا رہی ہے جس پر 20ارب روپے خرچ ہو ں گے اور یہ فنڈز پنجاب حکومت نے اپنے وسائل سے فراہم کئے ہیں ۔اس منصوبے کے پہلے مرحلے کا افتتاح 25دسمبر کو ہوگا ۔انہوں نے کہاکہ ہمیں کشکول اٹھانے کی عادت کو ہمیشہ کے لئے ترک کرنا ہوگا اب یا کشکول رہے گا یا کامیابی کیونکہ آگ او رپانی اکٹھے نہیں رہ سکتے۔وزیراعلی نے طلبہ پرزور دیا کہ وہ محنت سے کام کریں اور وطن عزیز کو عظیم ملک بنائیں ۔وزیراعلی نے فیکلٹی ممبران میں شیلڈز اور تعریفی اسناد بھی تقسیم کیں۔تقریب سے صوبائی وزیر ہائر ایجوکیشن سید رضا علی گیلانی او رڈاکٹر عمر سیف نے بھی خطاب کیا۔

وزیراعلیٰ پنجاب

مزید :

صفحہ اول -