تنازعات کی ثالثی کے متبادل طریقہ کارپر عملدرآمدمیں تاخیر،وزیراعظم کا نوٹس

تنازعات کی ثالثی کے متبادل طریقہ کارپر عملدرآمدمیں تاخیر،وزیراعظم کا نوٹس

  

اسلام آباد (صباح نیوز) وزیرا عظم شاہد خاقان عباسی نے تنازعات کی ثالثی کے متبادل طریقہ کار قانون پر تاحال عملدرآمد نہ ہونے کا نوٹس لے لیا قانون کے نفاذ کے لیے سات ماہ سے سرکاری نوٹیفیکیشن کا اجراء کا انتظار کیا جا رہا ہے چیئرمین سینیٹ نے اس معاملے میں مداخلت کرتے ہوئے وزیر اعظم کو وزارت قانون و انصاف کی غفلت کے بارے میں آگاہ کر دیا ۔وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی خصوصی طور پر سینیٹ اجلاس میں شریک ہوئے انہوں نے گیس پر صوبوں کے اختیارات سے متعلق واضح کیا کہ ہم اس حوالے سے اٹھارویں ترمیم کا احترام کرتے ہیں مشترکہ مفادات کونسل میں بھی اس معاملے پر بات ہوئی گیس کمپنیاں خود مختار ہیں انہوں نے کہا کہ صوبوں کو اٹھارویں ترمیم کے تحت قدرتی وسائل پر اختیارات ملے ہیں صوبوں میں ڈی جیز مقرر کرنے کی تجویز سامنے آئی تھی ابھی تک اس میں پیشرفت نہیں ہوئی اجلاس کے دوران چیئرمین سینیٹ نے وزیر اعظم کو تنازعات کے حل کے عدالت سے ہٹ کر متبادل طریقہ کار کے نئے قانون پر عملدرآمد نہ ہونے کے بارے میں آگاہ کیا اور کہا کہ 23مئی کو سستے اور آسان انصاف کی فراہمی سے متعلق بل ایکٹ آف پارلیمینٹ بن گیا تھا قانون کی شق تین میں وفاقی حکومت نے متعلقہ عدالتوں پر اطلاق کے نوٹیفیکیشن کے اجراء کا اختیار اپنے پاس رکھ لیا اور سات ماہ گزرنے کے باوجود نوٹیفیکیشن نہیں جاری ہو سکا۔ وزیر اعظم نے چیئرمین سینیٹ کو یقین دہانی کرائی کہ ایوان بالا کے آئندہ سیشن سے پہلے یہ نوٹیفیکیشن جاری ہو جائے گا اور اس کی کاپی ایوان میں پیش کر دی جائے گی ۔

تنازعات

مزید :

صفحہ اول -