خاتون وفاقی محتسب کو عہدے سے ہٹانے پر وفاقی حکومت کو نوٹس

خاتون وفاقی محتسب کو عہدے سے ہٹانے پر وفاقی حکومت کو نوٹس

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے خاتون وفاقی محتسب کو عہدے سے ہٹانے کی درخواست پر وفاقی حکومت کو نوٹس جاری کرتے ہوئے قرار دیا ہے کہ تمام حکومتی اقدامات تاخیر کا شکار ہیں ، کیا عدالت ہی حکومت کے غیر قانونی اقدامات کو کالعدم قرار دے ،حکومت خود بھی کچھ کر لیا کرے۔مسٹر جسٹس شاہد کریم کے روبرو ہارون رشید میر ایڈووکیٹ کی درخواست پر سماعت شروع ہوئی تو درخواست گزار وکیل نے وفاقی حکومت، وزارت قانون و انصاف اور وفاقی خاتون محتسب یاسمین عباسی کو فریق بناتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ یاسمین عباسی کو2013ء میں وفاقی خاتون محتسب کے عہدے پر تعینات کیا گیا تھا ، جس کی معیاد رواں سال مارچ کے مہینے سے ختم ہو چکی ہے مگر جسٹس ریٹائرڈ یاسمین عباسی خاتون وفاقی محتسب کے عہدے پر غیر قانونی طور پر قابض ہیں ،خاتون وفاقی محتسب کو عہدے سے ہٹانے کا حکم دیا جائے۔عدالت نے ابتدائی سماعت کے بعد درخواست گزار کو مخاطب کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ حکومت کے تمام اقدامات پہلے ہی تاخیر کا شکار ہیں ، کیا عدالت ہی حکومت کے غیر قانونی اقدامات کو کالعدم قرار دے ،حکومت کو خود بھی کچھ کر لینا چاہئے، عدالت نے وفاقی حکومت کو نوٹس جاری کرتے ہوئے دو ہفتوں میں جواب طلب کر لیاہے۔

مزید :

علاقائی -