عمران خان سے متعلق فیصلے پر سخت تحفظات ہیں: قمرزمان کائرہ

عمران خان سے متعلق فیصلے پر سخت تحفظات ہیں: قمرزمان کائرہ

  

لاہور( نمائندہ خصوصی) پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر قمرزمان کائرہ نے کہا ہے کہ شہباز شریف اور عمران خان کے کیس دوبارہ دیکھنے کی ضرورت ہے ، طاہرالقادری کے پرامن احتجاج کا حصہ بنیں گے، عدلیہ میں ریفارمز ہونی چاہئیں ، عدلیہ کو غیر متنازعہ ہوکر اپنے اندر جھانکنا چاہیے،عمران خان سے متعلق فیصلے میں ہمیں سخت تحفظات ہیں ، نواز شریف حکومت میں تحریک چلانے کے عادی ہیں ، آرمی چیف نے پارلیمینٹ کی بالادستی کو مانا ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیپلز پارٹی تاجر ونگ کی تنظیم سازی پر مشاورتی اجلاس کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔ قمر زمان کائرہ کا کہنا تھا کہ سیاست میں گرما گرمی تو تھی مگر اب کچھ زیادہ گرمی بڑھ گئی ہے ، ہمارے مخالفین اور کچھ میڈیا دوست تسلسل کے ساتھ پیپلز پارٹی پر الیکشن کے التوا کے الزمات عائد کر رہے تھے، کچھ سیاسی اور میڈیا افلاطون الزام دے رہے تھے کہ ہم جمہوریت پر شب خون ماررہے ہیں ، اب سینیٹ سے بل کی منظوری کے بعد یہ الزام لگانے والے کم از کم اپنا یہ الزام ہی واپس لے لیں ۔ نواز شریف کا یہ کہنا کہ ملک میں سکہ شاہی چل رہی ہے یہ سب سے بڑی گالی ہے،اب سپریم کورٹ کو توہین عدالت کیلئے اور کیا چاہیے؟ ججز صاحبان دیکھ لیں کل کو گلی گلی یہ زبان استعمال ہو سکتی ہے، ہمارے وزیراعظم کو تو توہین عدالت میں سزا دیکر گھر بھیج دیا گیا، اسی لئے ہم کہتے ہیں کہ نواز شریف کے کیس میں اور ہمارے مخالفین کیخلاف ہتھ ہولا رکھا گیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ عمران خان و نیازی ایکسپریس ایکسچینج میں سزا نہیں دی گئی یہی کچھ شہباز شریف کے حدیبہ کیس میں ہتھ ہولا رکھ کر کیا گیا ہے۔ شہباز شریف نے ایک اور شو بازی کی ہے کہ کسانوں کے حقوق کا تحفظ کیا جائیگا، شہباز شریف صاحب آپ سے یہ کہنا ہے کہ مٹ جائے گی مخلوق تو انصاف کرو گے؟ کسان پہلے سے ہی شہباز حکومت کیخلاف سراپا احتجاج ہیں، پہلے کسانوں نے آلو جلائے، یہی کچھ گندم،چاول اور دیگر فصلوں کے معاملے پر کسانوں نے کیا ہے، کسان گنے کی فیصل کے حوالے سے احتجاج کر رہے ہیں ۔

مزید :

صفحہ آخر -