پہلی بار 40ارب کی کثیر لاگت سے سوات ایکسپریس وے تعمیر کر رہے ہیں : پرویز خٹک

پہلی بار 40ارب کی کثیر لاگت سے سوات ایکسپریس وے تعمیر کر رہے ہیں : پرویز خٹک

  

صوابی (بیورورپورٹ )وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویزخٹک نے کہا ہے کہ فاٹا کو خیبرپختونخوا میں ضم کرنے کے حوالے سے وفاق نے ہمیں مطمئن کیاہے اگر اس کے باوجود حکومت اپنے وعدے سے منحرف ہوگئی تو اس کے خلاف کھل کر میدان میں آئیں گے ،ان خیالات کا اظہار انہوں نے بُدھ کی کرنل شیر انٹرچینج کے مقام پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ،اس موقع پر پی ڈبلیو او کے ڈی جی نے وزیراعلیٰ پرویزخٹک کو سوات ایکسپریس وے پر جاری کام کے حوالے سے بریفنگ دی ،پرویزخٹک نے سوات ایکسپریس وے 9 کلومیٹر روڈ کا تفصیلی معائنہ کیا اور متعلقہ حکام کو منصوبے پر جاری کام کو تیزکرنے کی ہدایت کی ،پرویزخٹک نے کہا کہ گزشتہ روزآرمی چیف اور وزیراعظم سے ملاقات کے دوران میں نے فاٹا انضمام کے بارے میں کھل کر بات کی کہ 2018 کے الیکشن سے قبل فاٹا کو خیبرپختونخوا میں ضم کیا جائے اور فاٹا کے عوام کے مطالبات کو عملی جامہ پہنایا جائے ،جس پر انہوں نے ہمیں یقین دہانی کرائی کہ فاٹا کو خیبرپختونخوا میں ضم کیاجائے گا تاہم وزیراعلیٰ نے واضح کردیا کہ ہم کسی صورت میں فاٹا انضمام میں تاخیر نہیں مانیں گے اور اس میں جو بھی رکاوٹ پیش آئے گا اس کو دور کرانا ہوگا ،قبائلی علاقہ جات میں ایڈمنسٹریشن ،لیگل سسٹم اور دیگر سہولیات میسر نہیں ہے اسلئے قبائلی عوام کے بہتر مفاد اور علاقے کی ترقی کیلئے فاٹا کا انضمام ضروری ہے اس سے فاٹا میں دہشتگردی کا خاتمہ ہوجائے گا ،اسی طرح آرمی کو بھی وہاں مزید ڈیوٹی انجام دینے نہیں پڑے گا ،انہوں نے واضح کردیا کہ فاٹا کو خیبرپختونخوا میں ضم کرنے کے علاوہ سے صوبائی حکومت اور گورنر خیبرپختونخوا ایک پیج پر ہیں ، ہم چاہتے ہیں کہ فاٹا خیبرپختونخوا میں ضم ہوجائے ،اس حوالے سے صوبائی حکومت اور گورنر نے 11کور اجلاس میں اس حوالے سے مؤقف اپنایا ہے ،انہوں نے کہا کہ مولانا سمیع الحق سے اتحاد کے دوران کسی قسم کی شرائط یا سیٹوں کی بات نہیں ہوئی ہے ،الیکشن میں بھرپور کامیابی کیلئے ہم آپس میں بیٹھ اکٹھے چلیں گے ،انہوں نے کہا کہ ایم ایم اے بننے کے باجود ہم بھرپور انداز میں آئندہ الیکشن میں تمام جماعتوں کامقابلہ کریں گے صوبے میں ہمیں کوئی فکر نہیں،انہوں نے کہاکہ اگر جماعت اسلامی نے حکومت سے علیحدگی اختیارکی تواس کے باوجودہماری حکومت کو کوئی خطرہ نہیں کیونکہ اسمبلی میں ہماری تعداد پوری ہے ، الیکشن قریب ہے گٹھ جوڑ ہر کسی کا حق ہے ، ایم ایم اے سمیت تمام جماعتیں اکٹھی ہوجائے توان کا مقابلہ کریں گے ،انہوں نے کہاکہ سوات ایکسپریس وے مارچ تک مکمل ہوکر اسے اپریل میں عوام کیلئے کھول دیاجائے گا،اس روڈ سے ملاکنڈ چترال تک تمام علاقوں کو فائدہ پہنچے گا ،اس روڈ سے روزانہ 15 سے 20 ہزار گاڑیاں گزرے گی ، انہوں نے کہا کہ خیبرپختونخوا میں تین اہم شاہراؤں پر کام ہورہا ہے ،ہزارہ موٹروے بن رہا ہے ،ملاکنڈ اور ڈی آئی خان روڈ پر کام شروع ہے اسی طرح سوات ایکسپریس وے کی تعمیر سے صوابی بھی ترقی کرے گا ۔

بٹ خیلہ(بیورورپورٹ)وزیراعلیٰ خیبر پختو نخواپرویزخٹک نے کہاہے کہ ملک کی تاریخ میں پہلی بارصوبائی حکومت 40ارب روپے کی لاگت سے سوات ایکسپریس وے تعمیر کررہی ہے جس سے مالاکنڈڈویژن کے سات اضلاع کے لاکھوں لوگ مستفیدہونگے سوات ایکسپریس وے سے متاثرین کوقانونی کے مطابق معاوضہ دیاجائیگا اورظلم کوٹ کے مقام پرعوام کے سیروتفریخ کیلئے پارک بھی جلدتعمیر کیاجائیگا ۔ان خیالات کااظہاروزیراعلیٰ پرویزخٹک نے گزشتہ روز سوات ایکسپریس وے کے جاری ترقیاتی کام کے معائنے کے موقع پرکارکنوں سے گفتگوکرتے ہوئے کیااس موقع پرصوبائی وزیروزراء محمودخان اوراکبرایوب خان بھی ان کے ہمراہ تھے ۔ا س موقع پرپی ٹی آئی مالاکنڈکے جنرل سیکرٹری پیرمصورغازی لیبرونگ کے صدرسکندرحیات اوردیگرکارکنان بھی موجود تھے ۔انہوں نے کہاکہ صوبائی حکومت عوام کوتمام سہولیات فراہم کرنے کیلئے اقدامات کررہی ہے انہوں نے کہاکہ سابقہ حکمرانوں نے اپنے جیبون کوبھرنے کیل ئے ایزی لوڈکلچرکوعام کیاتھا اورلوٹ مارکرکے چلے گئے ہیں ائندہ الیکشن میں عوام دوبارہ پی ٹی آئی کوووٹ دیکرپورے ملک پرپاکستان تحریک انصاف کے حکمرانی ہوگی کیونکہ موجودہ حکومت نے پانچ سالہ دوراقتدارمیں جوکام کیاہے وہ سابقہ حکمرانوں نے سترسالوں میں بھی نہیں کیاہے انہوں نے کہاکہ عوام اپنے بچوں کے روشن مستقبل کیلئے پاکستان تحریک انصاف کے ساتھ دیجئے کیونکہ ملک کے عوام کودرپیش مسائل کاحل صرف اورصرف پاکستان تحریک انصاف کے پاس ہے ۔انہوں نے کہاکہ جب تک ملک سے کرپشن کاخاتمہ نہیں کیاگیاہے اس وقت تک ملک ترقی کے راہ پرگامزن نہیں ہونگے انہوں نے کہاکہ تحریک انصاف نے کرپشن اوربدعنوانی کے خاتمے کیلئے اپنے تمام ترصلاحیتوں کوبروئے کارلائیگی اورعمران خان کے قیادت میں متحد ہوگی ۔

پشاور( سٹاف رپورٹر)وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک نے صوبے کے آئمہ مساجد کیلئے دس دس ہزار روپے اعزازیہ کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ ماہانہ وظیفہ صوبے کی تمام جامع مساجد کے امام صاحبان کو اگلے چند ہفتوں میں ضابطے کی کاروائی مکمل ہونے پر باقاعدگی سے ملے گا۔ انہوں نے واضح کیا کہ اتنی معمولی رقم دراصل تنخواہ نہیں بلکہ صوبائی حکومت کی جانب سے علماء اور آئمہ کے بلند مقام کا علامتی اعتراف ہے ہم معاشرے میں علماء کا احترام بڑھانے میں مزید اقدامات سے بھی گریز نہیں کرینگے وزیراعلیٰ نے کہا کہ صوبائی حکومت نے دینی مدارس میں عصری و سائنسی علوم متعارف کرنے کیلئے عملی اقدامات کئے جبکہ دوسرے تمام سماجی شعبوں کے ساتھ ساتھ علماء کرام کی مشاورت سے صوبے میں اسلام اور شریعت سے متعلق ٹھوس قانون سازی کی ہے حالانکہ اس کی توفیق ماضی میں مذہب اور نفاذ شریعت کے نعروں پر برسراقتدار آنے والی حکومتوں کو بھی نہ ہو سکی۔ انہوں نے علماء پر زور دیا کہ وہ معاشرے کو اسلامی سانچے میں ڈھالنے کیلئے ہماری صوبائی حکومت کی رہنمائی جاری رکھیں ہم علماء کی نشاندہی پرمزید اقدامات اور قانون سازی سے بھی دریغ نہیں کرینگے وہ نوشہرہ کے علاقے ڈاک اسماعیل خیل میں جامعہ کریمیہ غفوریہ کے زیر اہتمام سیرت النبیﷺ کانفرنس سے بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کر رہے تھے جس کا انعقاد جشن عید میلاد النبیﷺ کے سلسلے میں ہر سال کیا جاتا ہے۔ اس روحانی اجتماع سے دارالعلوم کے مہتمم پیر آف ڈاگ اسماعیل خیل رحمت کریم، پیر آف مانکی شریف، پیرزادہ شمس الامین، سابق وفاقی وزیر مذہبی امور پیر نور الحق قادری، ڈاکٹر علامہ شفیق امینی، مولانا فضل سبحان، محمد سلیم جنیدی، مولانا علی زمان چشتی، پیرزادہ سید حسین اور دیگر جید علماء نے بھی خطاب کیا جنہوں نے معاشرے کو کرپشن اور دوسری سماجی برائیوں سے پاک کرنے اور اسلامی قوانین رائج کرنے سے متعلق صوبائی حکومت کے ٹھوس اقدامات کوسراہا اور اپنے بھرپور تعاون کا یقین دلایا وزیراعلیٰ نے اس موقع پر دارالعلوم سے فارغ التحصیل طلباء میں اسناد فضیلت بھی تقسیم کیں جو وفاقی المدارس سلیبس کے تحت یونیورسٹیوں کی ڈگری کے برابر حیثیت رکھتی ہیں۔ پرویز خٹک نے اپنے خطاب میں کہا کہ جامعہ کے زیراہتمام مسلسل اُنتیسویں سیرت النبیؐ کانفرنس کا انعقاد اور اس میں خیبر پختونخوا، فاٹا اور پنجاب سے جید علماء کی شرکت ایک بڑا اعزاز ہے۔ جس سے ثابت ہوتا ہے کہ ہماری دھرتی کے لوگ پیغمبر اخر الزمانؐ کے پروانے اور انکی عزت و تکریم کے لئے کسی بھی قربانی کوتیار ہیں انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی حکومت اہل سیاست کے ساتھ ساتھ علماء کرام سے مشاورت پر بھی یقین رکھتی ہے ہم نے انکی ہر تجویز کا خیرمقدم کیا ہے ہم نے تعلیم، صحت، پولیس اور دیگر سماجی شعبوں سمیت پورے نظام کی درستگی کے ساتھ ساتھ اسلامی تعلیمات کے فروغ کیلئے بھی اقدامات اور قانون سازی کی ہے ہم نے سودی کاروبار کی ممانعت کا قانون نافذ کیا درسی کتب میں اسلامی تعلیمات سے متصادم غلطیوں کی بھی درستگی کی تمام نجی اور سرکاری سکولوں میں انٹرمیڈیٹ کی سطح تک قرآن باترجمہ اور ناظرہ کی تعلیم کو لازمی قرار دیا جبکہ ہم علماء کرام کی مشاورت سے ایسے مزید اقدامات اور قانون سازی کیلئے بھی تیارہیں اسی طرح انہوں نے کہا کہ ہم نے امسال سکولوں کے ساتھ ساتھ دینی مدارس اور مساجد میں سولر سسٹم لگانے کا پروگرام بھی شروع کیا ہے جس سے چارہزار مدارس و مساجد مستفید ہونگے پرویز خٹک نے کہا کہ کرپشن ایک بڑی برائی ہے جس کے خلاف صوبائی حکومت نے جہاد کا آغاز کیا ہے جب تک معاشرے سے رشوت اور سفارش کا خاتمہ نہیں ہوگا ہماری ترقی ناممکن ہے۔ انہوں نے کہا کہ عوام کو بنیادی سہولیات اور آسانیاں فراہم کرنا ہمارا ایجنڈا ہے انہوں نے کہا کہ تبدیلی کے اس مشن میں ہم سے غلطیاں بھی ہو سکتی ہیں مگر علماء کرام اور صاحب رائے لوگ ہماری رہنمائی کریں تو مسلسل بہتری آئیگی اور ہم اسلامی فلاحی معاشرے کی قیام کیلئے زیادہ بہتری سے قدم بڑھاسکیں گے۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -