خیبرپختونخوا بلدیاتی انتخابات،جمعیت علماء اسلام 21پی ٹی آئی 14،اے این پی 7،(ن) لیگ 3،جماعت اسلامی 2،آزاد6 نشستوں پر کامیاب،جے یو آئی نے پی ٹی آئی سے پشاور چھین لیا

خیبرپختونخوا بلدیاتی انتخابات،جمعیت علماء اسلام 21پی ٹی آئی 14،اے این پی 7،(ن) ...

  

پشاور (مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) خیبرپختونخوا میں بلدیاتی الیکشن کے پہلے مرحلے کے 64 میں سے 51 نشستوں کے نتائج آگئے۔ جمعیت علماء  اسلام (ف) 17، تحریک انصاف14، اے این پی 7، آزاد امیدوار 6 نشستوں پر کامیاب جبکہ مسلم لیگ ن 3، جماعت اسلامی 2، پاکستان پیپلزپارٹی 1 اور تحریک اصلاحات پاکستان نے ایک سیٹٰ جیت لی۔خیبر پختونخوا کے 17 اضلاع میں بلدیاتی حکومتوں کے انتخابات کے پہلے مرحلے کے لیے پولنگ کا عمل مکمل ہو گیا ہے۔ جن اضلاع میں بلدیاتی انتخابات منعقد ہو ئے ان میں پشاور، نوشہرہ، چارسدہ، مردان، صوابی، کوہاٹ، خیبر، مہمند، ہنگو، بنوں، کرک، لکی مروت، ڈیرہ اسمٰعیل خان، ہری پور، بونیر، ٹانک اور باجوڑ شامل ہیں۔ صوبے کے قبائلی اضلاع کے عوام نے تاریخ میں پہلی بار اپنے بلدیاتی نمائندے منتخب کرنے کے لیے ووٹنگ میں حصہ لیا۔ خیبر پختونخوا کے 17 اضلاع کی 63 تحصیل کونسلز کے میئر یا چیئرمین کی نشستوں کے لیے 689 امیدوار میدان میں اْترے۔واضح رہے کہ بلدیاتی انتخابات کے دوسرے مرحلے میں صوبے کے دیگر 18 اضلاع میں انتخابات 16 جنوری 2022 کو ہوں گے۔۔بلدیاتی انتخابات کے لیے ہر ووٹر نے 6 ووٹ کاسٹ کیے، میئر سٹی کونسل اور چیئرمین تحصیل کونسل کی نشست کے لیے ووٹر کو سفید رنگ، نیبر ہڈ اور ولیج کونسل کے لیے سلیٹی رنگ جبکہ خواتین کی نشست کے لیے گلابی رنگ کا بیلٹ پیپر دیا گیا۔ بلدیاتی انتخابات کے پہلے مرحلے میں 2 ہزار 32 امیدوار بلامقابلہ منتخب ہو چکے ہیں۔ جنرل نشستوں پر 217، خواتین نشستوں پر 876، کسان کی نشستوں پر 285 اور یوتھ نشستوں پر 500 جبکہ اقلیتی نشستوں پر 154 امیدوار بلامقابلہ کامیاب ہوئے۔اب تک کے غیر حتمی اورغیر سرکاری نتائج کے مطابق 64 میں سے 53 سیٹوں کے الیکشن کے نتائج سامنے آگئے ہیں، جمعیت علمائے اسلام (ف) نے 16 تحصیل چیئر مینوں سمیت 18 سیٹیں جیت لی ہیں۔ کوہاٹ اور پشاورسے میئر کا الیکشن مولانا  فضل الرحمن کی جماعت نے جیت لیا ہے۔الیکشن میں دوسرے نمبر پر پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) ہے، صوبائی حکومت ہونے کے باوجود ابھی تک کوئی میئر کا الیکشن نہ جیت پائی، تاہم 14 تحصیل چیئر مینوں کے الیکشن میں فاتح قرار پائی۔عوامی نیشنل پارٹی نے اب تک 8 سیٹیں حاصل کی ہیں۔ ایک میئر اور 7 تحصیل چیئر مینوں کے الیکشن جیتنے میں کامیاب ہوئی۔ 7 آزاد امیدوار تحصیل چیئر مین کے الیکشن جیتنے میں سرخرو ہوئے۔پاکستان مسلم لیگ ن کے حصے میں 3، جماعت اسلامی 2، پاکستان پیپلز پارٹی1 اور تحریک اصلاحات پاکستان نے بھی ایک نشست جیتی۔ضلع بنوں کی تحصیل  وزیر سے جمعیت علمائے اسلام (ف) کے ملک مستو خان نے کامیابی حاصل کر لی،بنوں کی تحصیل چیئر مین ککی میں پاکستان تحریک انصافکے جنید الرشید کامیاب ٹھہرے، تحصیل چیئر مین ہنگو میں آزاد امیدوار عامر غنی نے میدان مار لیا، انہوں نے 13761 ووٹ حاصل کیے، بونیر کی تحصیل چیئر مین گاگرہ سے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے سیّد سالار جہان 9344 ووٹ لیکر کامیاب ہوئے،ضلع بونیر کی تحصیل چیئر مین گدیزئی سے پاکستان تحریک انصاف کے شیر عالم خان 10365 ووٹ لیکر سرخرو ہوئے۔بنوں کی تحصیل چیئرمین میریان کے مکمل غیرحتمی غیر سرکاری نتیجہ کے مطابق آزاد امیدوار پیر کمال شاہ نے پی ٹی آئی کو شکست دیدی ہے۔ فاتح امیدوار نے 11 ہزار 885 ووٹ لیے صوابی کی تحصیل تحصیل چیئرمین رزڑکے غیر حتمی اور غیر سرکاری نتائج کے مطابق ایاین پی کے غلام حقانی 22 ہزار 743 ووٹ لے کرکامیاب ہوئے، ضلع پشاور کی تحصیل چیئرمین حسن خیل سے پاکستان تحریک انصاف کے حفیظ الرحمان آفریدی نے کامیابی حاصل کر لی،ضلع پشاور کی تحصیل چیئرمین شاہ عالم سے جمعیت علمائے اسلام (ف) کے کلیم اللہ نے کامیابی حاصل کرلی۔ضلع نوشہرہ کی تحصیل چیئرمین پبی سے عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) کے غیور علی خٹک نے کامیابی حاصل کرلی۔ پاکستان تحریک انصاف کے اشفاق احمد کو شکست کا سامنا کرنا پڑامہمند کی تحصیل چیئرمین اپر مہمند سے جمعیت علماء اسلام (ف) کے حافظ تاج ولی نے کامیابی حاصل کرلی۔ پاکستان تحریک انصاف کے حافظ امیر اللہ کو شکست کا سامنا کرنا پڑا، فاتح امیدوار نے 7987 ووٹ حاصل کیے جبکہ پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار حافظ امیراللہ نے 3914 ووٹ حاصل کیے۔تحصیل چیئرمین صوابی سے پاکستان تحریک انصاف کے عطا اللہ خان نے کامیابی حاصل کرلی۔ عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) کے اکمل خان کو شکست کا سامنا کرنا پڑا، فاتح امیدوار نے 29363 ووٹ حاصل کیے جبکہ عوامی نیشنل پارٹی کے امیدوار اکمل خان نے 21050 ووٹ حاصل کیے۔ضلع کوہاٹ تحصیل چیئرمین لاچی سے آزاد امیدوار محمد احسان نے کامیابی حاصل کرلی۔ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی ا?ئی) کے صائم امتیاز قریشی کو شکست کا سامنا کرنا پڑا،ہنگو میں تحصیل چیئرمین ٹل سے جمعیت علماء اسلام (ف) کے مفتی عمران محمد نے کامیابی حاصل کرلی۔ پاکستان تحریک انصاف  کے جاوید حسن کو شکست کا سامنا کرنا پڑابنوں میں تحصیل چیئرمین میریان سے آزاد امیدوار پیر کمال شاہ نے کامیابی حاصل کرلی۔ڈی آئی خان میں تحصیل چیئرمین کلاچی سے پاکستان تحریک انصاف آریز گنڈاپور نے کامیابی حاصل کرلی۔ پاکستان پیپلزپارٹی (پی پی) کے فریدون گنڈاپور کو شکست کا سامنا کرنا پڑا، فاتح امیدوار نے 18675 ووٹ حاصل کیے جبکہ پاکستان پیپلزپارٹی کے امیدوار فریدون گنڈاپور نے 7890 ووٹ حاصل کیے۔ہری پور میں تحصیل چیئرمین خانپور سے پاکستان مسلم لیگ نون کے راجہ ہارون سکندر نے کامیابی حاصل کرلی۔ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی ا?ئی) کے راجہ شہاب سکندر کو شکست کا سامنا کرنا پڑا، فاتح امیدوار نے 32361 ووٹ حاصل کیے جبکہ پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار راجہ شہاب سکندر نے 26296 ووٹ حاصل کیے۔بونیر میں تحصیل چیئرمین چغزئی سے پاکستان تحریک انصاف کے شریف خاں نے کامیابی حاصل کرلی۔ جماعت اسلامی کے محمد زیب کو شکست کا سامنا کرنا پڑا، فاتح امیدوار نے 8001 ووٹ حاصل کیے جبکہ جماعت اسلامی کے امیدوار محمد زیب نے 4310 ووٹ حاصل کیے۔بونیر میں تحصیل چیئرمین ڈگر سے پاکستان تحریک انصاف کے روزی خاں نے کامیابی حاصل کرلی۔ جمعیت علماء  اسلام (ف) کے عارف اللہ کو شکست کا سامنا کرنا پڑا، فاتح امیدوار نے 8547 ووٹ حاصل کیے جبکہ جمعیت علماء اسلام (ف) عارف اللہ نے 6201 ووٹ حاصل کیے۔بونیر میں تحصیل چیئرمین خدوخیل سے عوامی نیشنل پارٹی کے گلزار حسین بابک نے کامیابی حاصل کرلی۔ پاکستان تحریک انصاف کے محمد افسر خان کو شکست کا سامنا کرنا پڑا،سٹی میئر مردان سے عوامی نیشنل پارٹی کے حمایت اللہ مایار نے کامیابی حاصل کرلی۔ پاکستان تحریک انصاف کے رضوان خان کو شکست کا سامنا کرنا پڑا، فاتح امیدوار نے 26616 ووٹ حاصل کیے مردان میں تحصیل چیئرمین گڑھی کپورہ سے عوامی نیشنل پارٹی کے بختاور خان نے کامیابی حاصل کرلی۔ جمعیت علماء اسلام (ف) کے محمد ایاز کو شکست کا سامنا کرنا پڑا،مردان میں تحصیل چیئرمین تخت بھائی سے جمعیت علماء اسلام (ف) کے محمد سعید نے کامیابی حاصل کرلی۔ پاکستان مسلم لیگ (نواز) کے ممتاز خان مہمند کو شکست کا سامنا کرنا پڑا، فامردان میں تحصیل چیئرمین کاٹلنگ سے جمعیت علماء  اسلام (ف) کے حماد اللہ یوسفزئی نے کامیابی حاصل کرلی۔ مردان میں تحصیل چیئرمین رستم سے جمعیت علماء اسلام (ف) کے مبارک احمد درانی نے کامیابی حاصل کرلی۔ پشاور میں تحصیل چیئرمین چمکنی سے عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) کے ارباب عمر خان نے کامیابی حاصل کرلی۔ پاکستان تحریک انصافکے نبی گل کو شکست کا سامنا کرنا پڑا، فاتح امیدوار نے 24415 ووٹ حاصل کیے جبکہ پاکستان تحریک انصافنے 20398 ووٹ حاصل کیے۔ تحصیل چیئرمین نوشہرہ سے پاکستان تحریک انصاف کے اسحاق خٹک نے کامیابی حاصل کرلی۔ جمعیت علماء اسلام (ف) کے مفتی حاکم علی خیل کو شکست کا سامنا کرنا پڑا، نوشہرہ میں تحصیل چیئرمین جہانگیرہ سے پاکستان تحریک انصافکے کامران رازق نے کامیابی حاصل کرلی۔ پاکستان پیپلزپارٹی (پی پی) کے جمشید خان کو شکست کا سامنا کرنا پڑا تحصیل چیئرمین چارسدہ سے جمعیت علمائاسلام (ف) کے مولانا عبدالرؤف نے کامیابی حاصل کرلی۔چارسدہ تحصیل چیئرمین شبقدر سے جمعیت علماء  اسلام (ف) کے حمزہ ا?صف خان نے کامیابی حاصل کرلی۔خیبر میں تحصیل چیئرمین جمرود سے تحریک اصلاحات پاکستان کے سید نواب ا?فریدی نے کامیابی حاصل کرلی تحصیل چیئرمین لوئر مہمند سے پاکستان تحریک انصاف نوید احمد مہمند نے کامیابی حاصل کرلی۔ جمعیت علماء اسلام (ف) حافظ رشید احمد کو شکست کا سامنا کرنا پڑ امہمند میں تحصیل چیئرمین ہائیزئی سے جمعیت علماء اسلام (ف) کے مولانا بسم اللہ نے کامیابی حاصل کرلی۔ اصوابی میں تحصیل چیئرمین چھوٹا لاہور سے پاکستان مسلم لیگ (نواز) کے عادل خان نے کامیابی حاصل کرلی۔ جمعیت علماء  اسلام (ف) کو شکست کا سامنا کرنا پڑاصوابی میں تحصیل چیئرمین رزڑ سے عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) کے غلام حقانی نے کامیابی حاصل کرلی۔ پاکستان تحریک انصاف کو شکست کا سامنا کرنا پڑا، فاتح امیدوار نے 22743 ووٹ حاصل کیے جبکہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی ا?ئی) 13023 ووٹ حاصل کیے۔تحصیل چیئرمین صوابی سے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی ا?ئی) کے عطا اللہ خان نے کامیابی حاصل کرلی۔ پاکستان مسلم لیگ (نواز) کو شکست کا سامنا کرنا پڑا، فاتح امیدوار نے 29363 ووٹ حاصل کیے جبکہ پاکستان مسلم لیگ (نواز) 26224 ووٹ حاصل کیے۔سٹی میئر کوہاٹ سے جمعیت علماء  اسلام (ف) کے قاری شیر زمان نے کامیابی حاصل کرلی۔ ا?زاد امیدوار شفیع اللہ جان کو شکست کا سامنا کرنا پڑا، فاتح امیدوار نے 34434 ووٹ حاصل کیے جبکہ ا?زاد امیدوار 25793 ووٹ حاصل کیے۔کرک میں تحصیل چیئرمین بانڈہ داؤد شاہ سے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی ا?ئی) کے عنایت اللہ نے کامیابی حاصل کرلی۔ جمعیت علماء اسلام (ف) کو شکست کا سامنا کرنا پڑا، فاتح امیدوار نے 13209 ووٹ حاصل کیے جبکہ جمعیت علماء  اسلام (ف) کے امیدوار 12170 ووٹ حاصل کیے۔پاکستان تحریک انصافکو میئرز کے انتخابات میں اپ سیٹ شکست کا سامنا ہے  پہلے مرحلے میں 5 سٹی کونسلز کے لیے انتخابات ہونے تھے لیکن بکا خیل تحصیل کونسل اور ڈیرہ اسماعیل خان سٹی کونسل میں انتخاب نہیں ہوا۔ کونسل ڈیرہ اسماعیل خان میں عوامی نیشنل پارٹی کے میئر کے امیدوار کو قتل کیے جانے کی وجہ سے ادھر پولنگ ملتوی کردی گئی تھی اور 4 سٹی کونسلز مردان، پشاور، کوہاٹ اور بنوں میں سٹی میئر کیلئے پولنگ ہوئی۔پشاور، مردان، بنوں اور کوہاٹ میں میئر کیلئے پی ٹی آئی کا کوئی امیدوارکامیاب نہ ہوسکا۔ تازہ ترین غیر حتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق مطابق مردان میں عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) کے حمایت اللہ مایار 56 ہزار 458 ووٹ لے کر کامیاب قرار پائے جبکہ جمیعت علمائے اسلام کے امانت شاہ حقانی 49 ہزار 938 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔ کوہاٹ میں جمعیت علمائے اسلام کے شیر زمان بھی 34 ہزار 434 ووٹ لے کر میئر کا انتخاب جیت گئیپشاور میں سٹی میئر کا میدان بھی جمعیت علمائے اسلام نے مار لیا۔ جمعیت علمائے اسلام کے زبیر علی 62388 ووٹ لے کر کامیاب قرار پائے جبکہ پاکستان تحریک انصاف کے محمد رضوان بنگش 50659 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔بنوں میئر کیلئے جے یو آئی کے امیدوار عرفان اللہ درانی 27 ہزار 500 ووٹ لے کر آگے ہیں جبکہ پی ٹی آئی کے اقبال جدون خان 22 ہزار 800 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر ہیں۔کچھ دیر میں بنوں کے میئر کے الیکشن کے بھی مکمل نتائج سامنے ا?جائیں گے۔مولانا فجؒ الرحمن کی جماعت جے یو آئی نے  عمران کان کی تحریک انصاف سے  پشاور بھی چھین لیاپشاور میں تحریک انصاف کو بڑا دھچکا لگا ہے۔ 7 تحصیلوں میں سے پی ٹی آئی صرف ایک نشست جیت سکی۔ جے یو آئی اب تک 3 اور اے این پی دو تحصیل کونسلز جیتنے میں کامیاب ہوگئی۔پشاور سٹی میئر کی نشست پر بھی جے یو آئی نے میدان مار لیا اور الیکشن بھاری اکثریت سے جیت لیا۔ جے یو آئی کے زبیر علی کو 12 ہزار سے زائد ووٹوں کی برتری حاصل ہوئی جبکہ پی ٹی آئی کے رضوان بنگش دوسرے نمبر پر رہے۔جے یو آئی کے زبیر علی نے 63 ہزار 388 اور پی ٹی آئی کے رضوان بنگش  نے 50 ہزار 659 ووٹ حاصل کیے۔مردان میں پی ٹی آئی کا صفایا ہوگیا، 3 تحصیلوں پر جمیعت علماء  اسلام ف کامیاب قرار پائے جب کہ 2 تحصیلوں پر اے این پی کے امیدواروں نے میدان مارلیا۔

کے پی الیکشن 

مزید :

صفحہ اول -