نیوزی لینڈ میں شکست کے بعد دھونی کی کپتانی پر انگلیاں اٹھنے لگی

نیوزی لینڈ میں شکست کے بعد دھونی کی کپتانی پر انگلیاں اٹھنے لگی

  



نئی دہلی(آن لائن) بھارت کی دیار غیر سیریز میں ایک اور شکست کے ساتھ مہندرا سنگھ دھونی کی کپتانی پر انگلیاں اٹھنے لگی ہیں۔ نیوزی لینڈ کے ہاتھوں ایک صفر سے ناکامی بھارت کی بیرون ملک چوتھی مسلسل سیریز شکست تھی۔ اس سے قبل ون ڈے ورلڈ چیمپئنز کو اس طرز میں بھی 0-4 کی ناکامی کا سامنا کرنا پڑا۔ ٹیم کو تین ٹورز کے 12 میں سے 10 ٹیسٹ میں ناکامی نصیب ہوئی جبکہ 2 ڈرا ہوئے۔ سارو گنگولی نے دھونی کی ٹیسٹ کپتانی کو ناقابل قبول جبکہ راہول ڈریوڈ نے حکمت عملی کو کمزور قرار دیا ہے۔ البتہ دونوں انھیں آئندہ برس کے ورلڈ کپ تک عہدے پر برقرار رکھنا چاہتے ہیں۔ ایک اور سابق کپتان سنیل گاواسکر نے کہا کہ اچھی ٹیم ہی کپتان کو اچھا بناتی ہے۔ ایک نیوز چینل سے گفتگو کرتے ہوئے گنگولی نے کہا کہ ورلڈ کپ ایک برس سے کم دوری پر ہے۔ میں اس بات سے متفق ہوں کہ دھونی کی ٹیسٹ قیادت ناقابل قبول ہے لیکن اس وقت کپتان کی تبدیلی سے ٹیم غیر مستحکم ہو سکتی ہے۔ ٹیسٹ ٹیم میں ان کی جگہ پر کوئی شبہ نہیں لیکن دھونی کو بیرون ملک دوروں کا ریکارڈ بہتر بنانا ہوگا۔

 ڈریوڈ اس بات سے متفق ہیں کہ دھونی ایک دفاعی کپتان ہیں لیکن انھیں ملک سے باہر ٹیسٹ جیتنے کیلئے خطرات کا سامنا کرنے کی ضرورت ہے۔ انھوں نے مزید کہا کہ دورہ انگلینڈ اور آسٹریلیا کے بعد دھونی کی ٹیسٹ قیادت کا تجزیہ کرنا چاہیے کیونکہ آئندہ برس فروری، مارچ میں ورلڈ کپ بھی ہونے والا ہے۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی