ایس ای سی پی نے مائیکرو انشورنس ریگولیشن کی منظوری دے دی

ایس ای سی پی نے مائیکرو انشورنس ریگولیشن کی منظوری دے دی

کراچی(اکنامک رپورٹر)سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان کے پالیسی بورڈ نے انشورنس انڈسٹری کے فروغ کے لیے مائیکرو انشورنس ریگولیشن 2014 کی منظوری دے دی ہے۔ جن کا مقصد انشورنس کمپنیو ں کی استعداد کار کو بڑھانا اور ان کے مالی معاملات میں شفافیت لانا اور کم آمدن طبقے کو بھی انشورنس کی سہولت فراہم کرنا ہے۔ مائیکرو انشورنس کم آمدنی کے حامل طبقے کو انشورنس کوریج دینے کے لئے ہے جو عام طور پر انشورنس کی کوریج سے محروم رہتا ہے اور دہشت گردی کے واقعات اور قدرتی آفات سے متاثر ہونے کی صورت میں حکومتی یا بیرونی مدد پر انحصار کرتاہے۔ ایسے افراد مطلوبہ رقم یا وسائل نہ ہونے کے سبب اپنے معمولات زندگی ‘ کاروبار کی بحالی سے محروم رہتے ہیں۔ موجودہ انشورنس ریگولیشن کے تحت مجاز انشورنس کمپنیاںکم آمدن طبقے کو سہولت پہنچانے کے لئے سستی بیمہ پالیسیاں متعارف کرانے کی پابند ہو ں گی۔محمد آصف عارف‘ کمشنر انشورنس‘ ایس ای سی پی‘ کے مطابق پاکستان میں بیمہ پراڈکٹز متعارف کرانے کی موثر حکمت عملی کے فقدان کے سبب پاکستان میں انشورنس پالیسیوں کی فروخت صرف چالیس لاکھ ہے۔جب کہ ایس ای سی پی اور ورلڈ بنک کی مشترکہ ریسرچ کے مطابق جو کہ2012میں شائع ہوئی‘ پاکستان میں فی الوقت تین کروڑ سے زیادہ افراد کو انشورنش پالیسیاںخریدنی چائیے تھیں۔ موجودہ قوانین کے نفاذ سے انشورنس سیکٹر مطلوبہ افزائش حاصل کر سکے گا۔

مزید : کامرس