پیمکو کے دونوں پروگراموں سے ڈیڑھ ارب روپے سے زائدکا معیاری گوشت حاصل ہوا: رپورٹ

پیمکو کے دونوں پروگراموں سے ڈیڑھ ارب روپے سے زائدکا معیاری گوشت حاصل ہوا: ...

لاہور(کامرس رپورٹر)پنجاب ایگریکلچر اینڈ میٹ کمپنی کی طرف سے صوبہ بھر میں گوشت بڑھانے کے لئے شروع کئے گئے منصوبے "کٹا بچاﺅ" اور "فربہ پروگرام" کی سالانہ جانچ پڑتال چارٹڈ اکاﺅنٹنٹ فرمز ( ازیر حماد فیصل اینڈکمپنی اور© حسنین شفقت اینڈکمپنی )نے کی ۔ انہوں نے اپنی رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ پیمکو کے دونوں پروگرامزسے گزشتہ سال کے دوران 1.5 ارب روپے سے زائد کا 5580ٹن معیاری گوشت حاصل ہوا ہے جبکہ اس کے علاوہ ان منصوبوں کے لئے63 کروڑ روپے جانوروں کی خوراک بنانے والی صنعت میں سرمایہ کاری ہوئی،78 کروڑ روپے جانوروں کی خریداری میں خرچ کئے گئے جبکہ 6 ہزار سے زائد بے روزگار افراد کو لائیو سٹاک فارمز پر روزگار ملا ۔

 تھرڈ پارٹی جائزہ رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ پیمکو کی طرف سے دونوں منصوبے نہایت کامیابی سے چلائے گئے ہیں جس کا فائدہ براہ راست مویشی پال کسانوں کو ہوا۔ حتمی سفارشات میں یہ بھی لکھا گیا ہے کہ کسان کے وسیع تر مفاد کو مد نظر رکھتے ہوئے "گوشت بڑھاﺅ پروگرام" کو جاری رہنا چاہئے۔واضع رہے پیمکو نے گوشت بڑھاﺅ پروگرام کے تحت پنجاب بھر میں 3025 لائیو سٹاک فارمز رجسٹر کر رکھے ہیں جن میں جانوروں کی تعداد 60ہزار سے زائد ہے۔ ان جانور پال کسانوں کو گزشتہ سال 118ملین روپے کی سبسڈی دی جا چکی ہے۔ چیف ایگزیکٹیو پیمکو ممتاز خان منیس کا کہنا تھا کہ تھرڈ پارٹی کی رپورٹ خوش آ ئند ہے جس سے ہمارے حوصلے بلند ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے 118ملین روپے کی سبسڈی دی اور کسانوں نے اس سے مجموعی طور پر3ارب روپے کی سرمایہ کاری کی ۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ صوبے میں معیاری گوشت بڑھانے کے لئے ہمیں وسیع پیمانے پر جانوروں کو فربہ کرنا ہو گا تا کہ ملکی ضرورت پوری کرنے کے ساتھ گوشت کو دیگر ممالک میں برآ مد بھی کیا جا سکے۔ انہوں نے بتایا کہ پیمکو کے ان منصوبہ جات سے صوبے میں لائیو سٹاک فارمنگ کو فروغ ملا ہے اور اب یہ سیکٹر انڈسٹری کی شکل اختیار کر رہا ہے جو لائیو سٹاک کی ترقی کے لئے مثبت تبدیلی ہے۔

مزید : کامرس