فیلڈ افسران انتھک محنت اور دلجمعی سے کام کریں: وزیرآبپاشی پنجاب

فیلڈ افسران انتھک محنت اور دلجمعی سے کام کریں: وزیرآبپاشی پنجاب

  



لاہور(کامرس رپورٹر)محکمہ آبپاشی کی سروس ڈلیوری بہتر کرنے کے لئے فیلڈ افسران انتھک محنت اور دلجمعی سے کام کریں تاکہ کسانوں کو زرعی پیداوار بڑھانے کے وسیع مواقع میسر آ سکیں۔یہ بات صوبائی وزیر آبپاشی و چیئرمین پیڈا میاں یاور زمان نے محکمہ آبپاشی کے کمیٹی روم میں منعقدہ چیف انجینئرز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ اجلاس میں سیکرٹری آبپاشی ملک حسن اقبال، ایڈیشنل سیکرٹری(ایڈمن) سید وسیم رضا جعفری،ایڈیشنل سیکرٹری (آپریشن) ملک سلیم، چیف انجینئر(پلاننگ اینڈ ریویو)خالد حنیف بھٹی، چیف انجینئر(ریسرچ) وقار حسین وڑائچ، چیف انجینئرز(بیراجز) سید محمود الحسن، چیف انجینئر فیصل آباد خاور نذیر، چیف انجینئر ملتان عنایت اللہ چیمہ،چیف انجینئربہاولپور خورشید الزمان،چیف انجینئر ڈی جی خان شفیق چوہدری، چیف انجینئر (ڈویلپمنٹ) زاہد منصور کے علاوہ پیڈا کے جنرل منیجرز افضل انجم طور اور محبت خان نے شرکت کی۔کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر آبپاشی میاں یاور زمان نے کہا کہ محکمہ آبپاشی کے تمام وسائل کی ڈائریکٹری مرتب کی جائے گی تاکہ نہریاثاثہ جات کے بارے میں مکمل آگاہی ہو سکے۔انہوں نے کہا کہ محکمہ آبپاشی میں انتظامی، مالیاتی،قانونی اور آپریشنل معاملات میں بہتری لانے کے لئے ٹاسک گروپس جلد تشکیل دئیے جائیں جن کی سفارشات کی روشنی میں اصلاحاتی پروگرام پر عملدرآمد کیا جائے گا۔ پانی چوری اور نہروں کی ضروری تعمیرومرمت کے حوالے سے صوبائی وزیر نے کہا کہ تمام چیف زونل انجینئرز مانیٹرنگ ٹیموں کی رپورٹس پر فوری عملدرآمد کروانے کے پابند ہوں گے۔ انہوں نے ہدایت کی کہ پانی چوری کی روک تھام میں غفلت کا مظاہرہ کرنے والے اہلکاروں کی رپورٹ اے سی آر میں بھی درج کی جائے تاکہ اہل افراد کی ترقی کے راستے ہموار ہوں۔

 اس موقع پر انہوں نے ریٹائرڈ ہونے والے ملازمین کے لئے جلد پنشن کے اجراءکی بھی ہدایت کی۔صوبائی وزیر نے ہدایت کی کہ محکمہ آبپاشی کی سرگرمیوں سے متعلق مروجہ قانونی فریم ورک کے بارے میں فیلڈ افسران کی تربیت کے لئے بھی اقدامات کئے جائیں تاکہ وہ اپنے قانونی دائرہ کار میں رہ کر عوام کی خدمت کر سکیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ محکمہ آبپاشی کے ڈویژنل، سرکل اور زونل دفاتر میںمقدمہ بازی سے نمٹنے کے لئے سیل قائم کئے جائیں تاکہ عوامی مسائل کا جلدحل ممکن ہونے کے ساتھ ساتھ غیر ضروری مقدمہ بازی سے بھی بچا جا سکے۔چیف انجینئر کانفرنس میںیہ فیصلہ بھی کیا گیا کہ کسان تنظیموں کی جانب سے نہروں کی تعمیر ومرمت کے کاموں کی تھرڈ پارٹی مانیٹرنگ کروائی جائے گی تاکہ شفافیت کا پہلو مزید عیاں ہو سکے۔ اس موقع پر فیصلہ کیا گیا کہ سرکاری فنڈز کا استعمال کرتے ہوئے غیر ضرور ی اخراجات سے ہر صورت پہلو تہی کی جائے گی جبکہ دفاتر میں صفائی ستھرائی کا اعلی معیار لازمی مقدم رکھا جائے گا۔ اجلاس میں اس امر کا بھی فیصلہ کیا گیا کہ تمام فیلڈ افسران اپنے اپنے علاقوں میں کھلی کچہریاں بھی لگائیں تاکہ لوگوں کے مسائل مقامی سطح پر حل کئے جا سکیں۔ اس طرح چیف انجینئرز ماہانہ فیلڈوزٹس کے بعد انسپکشن نوٹ ہیڈکوارٹر کو بھجوائیں گے تاکہ آئندہ کی منصوبہ بندی سائنسی بنیادوں پر کی جا سکے۔اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سیکرٹری آبپاشی نے کہا کہ کسانوںکو نہری پانی کی فراہمی یقینی بنانے کے ساتھ ساتھ افسران کی کیپسٹی بلڈنگ پر بھی خصوصی توجہ دی جائے گی تاکہ وہ جدید علمی جہتوں سے واقف ہو کر بہتر انداز میں خدمت کر

مزید : کامرس