میٹرو منصوبہ کو لاری اڈہ تک توسیع دینے کے فیصلے پر تاجروں کا احتجاج

میٹرو منصوبہ کو لاری اڈہ تک توسیع دینے کے فیصلے پر تاجروں کا احتجاج

  



لاہور( اسد اقبال سے)راوی روڈ سے ملحقہ مارکیٹوں کے تاجروںاور رہائشیو ں نے میٹرو بس منصوبہ کو توسیع دینے کے لیے بغیر کسی مشاورت کے تاجروں کی دکانیںاور گودام تباہ و برباد کرنے اور رہائشیو ں کی مشکلات میں اضافے کے مو جب منصوبے پر شدید احتجاج کرتے ہوئے وزیراعلیٰ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ فوری طور پر سٹیک ہولڈرز اور مکینو ںکی ایک میٹنگ طلب کرکے اُن کا مطالبہ سنیں کیونکہ بیوروکریسی تاجروں کے ساتھ باقاعدہ غنڈہ گردی کررہی ہے جبکہ با با چھتر ی والے کے قر یب سڑک کو کراس کرنے کے لیے بنا یا گیا پل بلا جواز گرانے سے مکینو ں کو دوسر ی سائیڈ پر جانے کے لیے دو میل تک کی مسافت برداشت کر نا پڑتی ہے جس سے مکینو ں کی مشکلا ت بڑھ گئی ہیںانجمن تاجران آٹو پارٹس کے صدر وقار احمد میاں، راوی روڈ کے صدر ملک ذوالفقار،رہائشی کرامت علی کھو کھر ، الماس اور فیصل ذوالفقار نے پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب حکومت کی جانب سے میٹروبس منصوبے کو مینار پاکستان سے بذریعہ لاری اڈہ مستی گیٹ تک توسیع دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے اور سرکاری اہلکاروں نے آکر دکانوں اور گوداموںکو گرانے کے لیے نشانات بھی لگانے شروع کردئیے ہیں جس پر تاجر شدید پریشان ہیں انھو ںنے کہا کہ ان دکانوں اور گوداموں سے ہزاروں تاجروں اور اُن کے خاندانوں کا روزگار وابستہ ہے ایک طرف وزیراعظم میاں نواز شریف اور وزیراعلیٰ پنجاب تجارتی و معاشی سرگرمیوں کو فروغ دینے اور لوگوں کو روزگار فراہم کرنے کے لیے کام کررہے ہیں اور دوسری طرف بیوروکریسی ہزاروں لوگوں کو بے روزگار کرکے حکومت کی ساکھ متاثر کرنے کی سازش کررہی ہے انھو ں نے کہا کہ وزیراعلیٰ شہباز شریف بیوروکریسی کی من مانیوں کا نوٹس لیں اوربادامی باغ اور راوی روڈ پر تاجروں اور مکینو ں کی مشکلات میں کمی کے لیے جا مع منصو بہ بندی کے احکا مات صادر فر مائیں ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1