سروسز ہسپتال ،قوانین کے برعکس فرائض سرانجام دینے والی53ہیڈ نرسیں پکڑی گئیں

سروسز ہسپتال ،قوانین کے برعکس فرائض سرانجام دینے والی53ہیڈ نرسیں پکڑی گئیں

لاہور(جنرل رپورٹر) سروسز ہسپتال میں سالہا سال سے ڈیوٹی قوانین کے برعکس من پسند انداز میں فرائض انجام دینے والی 53 سینئر نرسیں پکڑ لی گئی ہیں ان سینئر نرسوں نے گزشتہ 15 سالوں سے نائٹ ڈیوٹی کے فرائض سر انجام نہیں دیئے تاہم چیف نرسنگ سپرنٹنڈنٹ نے 23 ہیڈ نرسوں کو نوٹسز جاری کر دیئے ہیں جبکہ ان میں سے سفارشی بنیادوں پر رات کی ڈیوٹی سر انجام نہ دینے والی 20 ہیڈ نرسوں کو ایک دفعہ پھر بچا لیا گیا ہے بتایا گیا ہے کہ ایم ایس کی طرف سے کرائی گئی تحقیقات جو کہ روزنامہ ”پاکستان“ میں شائع ہونے والی خبر پر کرائی گئی تھیں جس میں کہا گیا تھا کہ سروسز ہسپتال میں چیف نرسنگ سپرنٹنڈنٹ کے دفتر کی ملی بھگت سے 53 ہیڈ نرسیں ایسی ہیں جنہوں نے گزشتہ کئی سالوں سے رات کی ڈیوٹی کے فرائض سر انجام نہیں دیئے یہ ہیڈ نرسیں اعلیٰ سفارش یا ”نذرانے“ دے کر ماہانہ ڈیوٹی روسٹر کی خلاف ورزی کر رہی ہیں جس پر ایم ایس ڈاکٹر ریحانہ ملک نے چیف نرسنگ سپرنٹنڈنٹ سے جواب طلب کیا اور تحقیقات کرائیں 53 ایسی ہیڈ نرسیں سامنے آئیں جو سالہا سال سے سے ماہانہ ڈیوٹی روسٹر کی خلاف ورزی کی مرتکب ہوئیں ذرائع نے بتایا ہے کہ ان میں سے 23 نرسوں کو چیف نرسنگ سپرنٹنڈنٹ نے شو کاز جاری کئے ہیں جن میں مسز عذرا بشیر ہیڈ نرس، نور صفیہ ہیڈ نرس، کشور ہیڈ نرس، کنیز احمد ہیڈ نرس، رفعت ناہید ہیڈ نرس، راحت بشیر چارج نرس، زاہدہ لقمان چارج نرس، صفیہ عبداللہ علی چارج نرس، شیلا خان چارج نرس، فرزانہ حفیظ چارج نرس، نصرت محبوب چارج نرس، رخسانہ ابراہیم چارج نرس، شمیم اے حسین چارج نرس، اظہرہ بتول چارج نرس، سیمل شاہین چارج نرس، عذرا بشیر چارج نرس، عابدہ اکرم چارج نرس، ثمر کوکب چارج نرس، میری سیموئیل چارج نرس، بشریٰ چودھری چارج نرس، ضمیرہ غلام حیدر چارج نرس، مسرور سید چارج نرس اور عذرا منظور چارج نرس کے نام شامل ہیں، انہیں کہا گیا ہے کہ آپ نے عرصہ دراز سے نائٹ ڈیوٹی کے فرائض سر انجام نہیں دیئے وجہ بیان کریں۔

مزید : میٹروپولیٹن 1