جنوری 2012ءمیں فوج کی نقل وحرکت سے بھارتی” سرکار“ڈر گئی تھی: سابق ڈی جی ایم او اشوک چودھری

جنوری 2012ءمیں فوج کی نقل وحرکت سے بھارتی” سرکار“ڈر گئی تھی: سابق ڈی جی ایم او ...
AK Chaudhry

  



نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت کے سابق ڈائریکٹر جنرل ملٹری آپریشنز لیفٹیننٹ جنرل اشوک کمار چودھری نے انکشاف کیا ہے کہ جنوری 2012ءمیں فوج کی غیراعلانیہ مشقوں سے ’سرکار‘ پریشان ہوگئی تھی ،حکومت کو خوف تھاکہ فوج ”کچھ “کرنیوالی ہے ۔بھارتی میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے ڈی جی ایم او اے کے چودھری کا کہنا تھا کہ 2012ءبھارتی فوج کی دارالحکومت نئی دلی کی جانب غیر معمولی پیش قدمی کے باعث بھارتی حکومت پریشانی کا شکار ہوگئی تھی، 'حصار' اور 'آگرہ' سے آرمی کے دو یونٹوں نے نئی دلی کی جانب پیش قدمی کی تھی، حکومت کو پریشانی لاحق تھی جس کی اصل وجہ اعتماد کا فقدان تھا۔چودھری نے بتایاکہ فوج نے معمول کی مشقیں شروع کی تھیں لیکن سیکریٹری دفاع نے انہیں طلب کرکے فوجیں فوری طور پر واپس بھیجنے کا کہا تھا۔

مزید : بین الاقوامی