مذاکرات کی افادیت ختم ہوچکی ، دہشتگردمجرم ہیں ، مذہب کے لبادہ میں عوام کو بے وقوف نہیں بنایاجاسکتا: خورشیدشاہ

مذاکرات کی افادیت ختم ہوچکی ، دہشتگردمجرم ہیں ، مذہب کے لبادہ میں عوام کو بے ...
مذاکرات کی افادیت ختم ہوچکی ، دہشتگردمجرم ہیں ، مذہب کے لبادہ میں عوام کو بے وقوف نہیں بنایاجاسکتا: خورشیدشاہ

  

سکھر (مانیٹرنگ ڈیسک) قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ نے کہاہے کہ مذاکرات کی افادیت ختم ہوچکی ہے ، دہشتگرد مجرم ہیں اور اسلام کا روپ دھار کر عوام کو بے وقوف بنانے  کی کوشش کر رہے ہیں ، محسوس کرتا ہوں کہ دن دیہاڑے جونواں کی شہادت پر عسکری قوتیں تپش میں ہیں ۔ ایئر پورٹ پر  میڈیا  سے گفتگو کرتے ہوئے خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ مذاکرات  کی سمت نظر نہ آنا ہی اسکا سب سے بڑا ثبوت ہے، تمام چیزیں گو مہ گو کی حالت میں ہیں، وزیر اعظم اور ان کی ٹیم کو جلد از جلد فیصلہ کر لینا چاہئے ، ان واقعات کی روکتھام کے لیے ایسے اقدامات اٹھانے پڑیں گے کہ جس سے یہ تاثر جائے کہ حکومت بھی موجود ہے اور حکومت کی رٹ بھی ہے۔اُنہوں نے کہاکہ دہشتگرد کریمنلز ہیں اور اسلام کا روپ دھار کر عوام کو بے وقوف نہیں بنا سکتے جس طرح سے انکی روش ہے یہ تو یہودی مذہب میں بھی نہیں ہوتا۔ انہوں نے وزیراعظم کو یقین دلایا کہ انکی کرسی کو کوئی نہیں ہلا سکتا اور وہ انکی مدد کریں گے، اگر پاکستان کی ریاست مظبوط ہو گی تو ہی وزیر اعظم رہ سکتے ہیں جبکہ تمام حالات میں مجھ سے کوئی مشاورت نہیں ہوئی ۔خورشید شاہ نے بتایاکہ عسکری قوتوں نے میرے ساتھ تو کوئی بھی رابطہ نہیں کیا مگر اُن کے انداز سے ان کا غصہ معلوم ہوتا ہے کہ کبھی کبھی وہ رد عمل بھی دکھا دیتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملک بھر کی امن و امان کی صورتحال بہتر نہیں، عوام بجلی، گیس اور دیگر مسائل کے باوجود عوام سڑکوں پر نہیں آ رہی ہے ، صرف امن و امان کی وجہ سے سڑکوں پر ہیں۔

مزید : سکھر /اہم خبریں