”آج میری سابقہ بیوی کی سالگرہ ہے اس لئے صبح جلدی اٹھا اور۔۔۔ “ طلاق یافتہ شوہر نے اپنی سابقہ بیوی کی سالگرہ کے موقع پر سوشل میڈیا پر ایسا پیغام جاری کردیا جو آج تک کسی مرد نے نہ کیا ہوگا ،پوری دنیا کا دل جیت لیا

”آج میری سابقہ بیوی کی سالگرہ ہے اس لئے صبح جلدی اٹھا اور۔۔۔ “ طلاق یافتہ ...
”آج میری سابقہ بیوی کی سالگرہ ہے اس لئے صبح جلدی اٹھا اور۔۔۔ “ طلاق یافتہ شوہر نے اپنی سابقہ بیوی کی سالگرہ کے موقع پر سوشل میڈیا پر ایسا پیغام جاری کردیا جو آج تک کسی مرد نے نہ کیا ہوگا ،پوری دنیا کا دل جیت لیا

  

لندن (نیوز ڈیسک)میاں بیوی میں طلاق ہو جائے تو اس بات کا ہی تصور مشکل ہے کہ وہ دوبارہ ایک دوسرے کی شکل دیکھنا پسند کریں گے، کجا یہ کہ وہ ہنسی خوشی میل ملاقات کریں اور تحائف کا تبادلہ کریں۔ یہی وجہ تھی کہ جب برطانیہ سے تعلق رکھنے والے ایک شخص نے انٹرنیٹ پر انکشاف کیا کہ وہ اپنی سابقہ اہلیہ کے لئے تحائف لے کر گیا اور اسے اپنے ہاتھوں سے کھانا تیار کر کے کھلایا، تو لوگ حیرت زدہ رہ گئے۔ کچھ تیز مزاج لوگوں نے اسے تنقید کا نشانہ بنایا، اور کچھ نے مذاق بھی اڑایا، جس پر بالآخر اس شخص نے خود پر اٹھائے گئے سوالات کا تفصیل سے جواب دینے کا فیصلہ کیا۔

یہ نوجوان لڑکی بغیر کسی سہارے کے جان بوجھ کر اس بلند ترین عمارت سے اس طرح کیوں لٹکی ہوئی ہے؟ وجہ جان کر آپ کو اس انتہا کی حماقت پر یقین نہیں آئے گا

ویب سائٹ indy100 کی رپورٹ کے مطابق اس شخص نے ناقدین کو جواب دیتے ہوئے لکھا ہے ”اپنی سابقہ اہلیہ کی سالگرہ کے موقع پر میں اس کے لئے پھول اور کارڈ لے کر گیا اور اپنے ہاتھوں سے ناشتہ بنا کر اس کی خاطر تواضع کی۔ ہمیشہ کی طرح اس بار بھی مجھے کہا گیا کہ میں ایسا کیوں کرتا ہوں، تو میں نے سوچا کہ اس کی تفصیل آپ کے سامنے بیان کروں۔ میں دو بیٹوں کی پرورش کررہا ہوں۔ میں ان کے سامنے جو مثال قائم کروں گا کہ ان کی والدہ کے ساتھ کیسا سلوک کیا جاتا ہے، اس کا اثر ان کے ذہن اور رویے پر ہوگا کہ وہ خواتین کو کس طرح دیکھتے ہیں اور ان کے ساتھ کس طرح پیش آتے ہیں۔ ہمارے معاملے میں تو اس کی ضرورت اور بھی زیادہ ہے کیونکہ ہمارے درمیان طلاق ہوچکی ہے۔ میں یہ کہوں گا کہ ہمیں چھوٹی چھوٹی باتوں سے باہر نکل کر مثال بننا چاہیے۔ آپ اچھے بیٹوں اور مضبوط بیٹیوں کی پرورش کریں۔ براہ کرم! دنیا کو اس کی ضرورت جتنی آج ہے پہلے کبھی نہ تھی۔ ہم دونوں پہلے یہ نہ کرسکے اور ہمارے تعلقات میں تلخی ہمیں علیحدگی تک لے گئی، لیکن اب ہم نے یہ سب کچھ سیکھا ہے اور اپنے بچوں کیلئے یہ کربھی رہے ہیں۔ جب بچوں کی بات آتی ہے تو ہم اپنی تلخیاں پیچھے چھوڑدیتے ہیں اور ان کے لئے اچھی مثال قائم کرتے ہیں۔ یہ بہت مشکل تھا لیکن جب سے ہم نے یہ کرنا شروع کیا ہے تب سے ہمیں اپنے بیٹوں کی سلامتی، خوشی اور اعتماد میں بے پناہ اضافہ نظر آرہا ہے۔ تو کیا اپنی سابقہ اہلیہ، جو میرے بیٹوں کی ماں ہے، کو تحائف دینے اور اس کا خیال رکھنے کیلئے یہ وجہ کافی نہیں ہے؟“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -