اپوزیشن کی مذاکراتی ٹیم کی تشکیل میں سعودیہ کا کوئی کردارنہیں

اپوزیشن کی مذاکراتی ٹیم کی تشکیل میں سعودیہ کا کوئی کردارنہیں

  

دمشق(این این آئی)شامی اپوزیشن کی نمائندہ سپریم مذاکراتی کونسل نے واضح کیا ہے کہ 23 فروری کو جنیوا میں متوقع شام سے متعلق چوتھے اجلاس میں شرکت کے لیے مذاکراتی وفد کی تشکیل میں سعودی عرب کا کوئی کردار نہیں ہے۔شامی سپریم ڈائیلاگ کونسل کے ترجمان ریاض نعسمان آغا نے عرب ٹی وی سے بات کرتے ہوئے مذاکراتی وفد کی تشکیل میں سعودی عرب کے کسی بھی کردار کی تردید کی۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کے مذاکراتی وفد کی تشکیل میں سعودی عرب نے کسی قسم کی مداخلت نہیں کی اور نہ ہی سعودی عرب کا کوئی عہدیدار ان کے اجلاس میں شریک ہوا۔ڈاکٹر آغا نے اقوام متحدہ کے ایلچی اسٹیفن دی میستورا کے دورہ شام اور وہاں پر شامی اپوزیشن کے دوسرے گروپوں کے وفد کی تشکیل پر خبردار کیا۔ انہوں نے کہا کہ سپریم مذاکراتی کونسل کے وفد کے علاوہ کوئی اور وفد تشکیل دیا گیا تو مذاکرات ناکام ہوسکتے ہیں۔

اپوزیشن کے ترجمان ڈاکٹر نعسمان آغا نے کہا کہ دی میستورا جانتے ہیں کہ وہ اسد رجیم کی طرف سیمن پسند افراد پر مشتمل وفد تشکیل دے سکتے ہیں مگر اپوزیشن کی جانب سے ایسا نہیں ہوسکا۔ انہوں نے کہا کی دی میستورا شامی اپوزیشن کے وفد میں کسی شخص کو شامل کرنے یا کسی کونکالنے کا اختیار نہیں رکھتے۔شامی اپوزیشن کے ایک گروپ ’ماسکو فورم‘ نے تئیس فروری کو متوقع جنیوا مذاکرات میں شرکت کے بائیکاٹ کی دھمکی دی ہے۔

مزید :

عالمی منظر -