تاجروں نے 400 بوتل خون دیکر انسانیت کی بہترین مثال قائم کی، عتیق میر

تاجروں نے 400 بوتل خون دیکر انسانیت کی بہترین مثال قائم کی، عتیق میر

  

کراچی (اے پی پی) آل کراچی تاجر اتحاد کے چیئرمین عتیق میر نے کہا ہے کہ اولڈسٹی تاجر اتحاد کے قائم کردہ پہلے میڈیکل کیمپ میں تاجروں نے تھیلے سیمیا کے بچوں کے لئے 5 گھنٹوں میں 400 سے زائد خون کی بوتلیں عطیہ کرکے جذبہ انسانیت کی بہترین مثال قائم کی ہے، خون عطیہ کرنے کا یہ سلسلہ مزید مارکیٹوں تک وسیع کیا جائیگا، تاجر برادری خدمتِ انسانیت کے کام کاروبار سمجھ کر کرے ان کی دنیا کے ساتھ ساتھ آخرت بھی سنور جائے گی۔ جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایم اے جناح روڈ، میمن مسجد کے قریب کتیانہ میمن اسپتال کے تعاون سے لگائے گئے میڈیکل کیمپ کے افتتاح کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے سیلانی ویلفیئر ٹرسٹ کے سرپرست بشیر فاروقی کا بھی شکریہ ادا کیا جن کے تعاون سے میڈیکل کیمپ میں مفت او پی ڈی، ادویات، موبائل اسپتال میں آنکھوں کا ٹیسٹ، بلا معاوضہ چشمے، موتیا کا آپریشن، ہیپاٹائٹس بی، تھیلیسیمیا ٹیسٹ اور ڈینگی وائرس ٹیسٹ کے انتظامات کئے گئے تھے۔ اس موقع پر اولڈ سٹی تاجر اتحاد کے چیئرمین شیخ محمد عالم، اکرم رانا، عبدالصمد پردیسی، محمد آصف، زبیر احمد خان، شیخ رفیع، دلشاد بخاری، میر عبدالحئی خان، عبدالسمیع خان، یعقوب بالی اور دیگر بھی موجود تھے۔ عتیق میر نے کہا کہ تاجر برادری فلاحی کاموں میں حصہ لے۔ انہوں نے اس عزم کا ارادہ کیا کہ آل کراچی تاجر اتحاد کا چیریٹی گروپ انسانیت کے کام زندگی کی آخری سانس تک جاری رکھے گا۔ انہوں نے تاجروں سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ وہ نادار، مفلوک الحال اور بدحال لوگوں کی حسب توفیق مدد کریں۔

انہوں نے اس یقین کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ صاحب حیثیت افراد اگر اپنی ذمہ داریوں کو محسوس کریں تو معاشرے میں غربت اور تنگدستی کا بڑی حد تک خاتمہ ممکن ہے۔ انہوں نے تھیلے سیمیا کے شکار بچوں کی مدد کے تحت خون کے عطیات کیلئے مزید مارکیٹوں میں میڈیکل کیمپس لگانے کا بھی اعلان کیا۔ انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ شہریوں کیلئے تھیلے سیمیا ٹیسٹ لازم قرار دینے کے قانون پر عمل درآمد کرائے تاکہ نئی نسلوں کو اس مہلک اور لاعلاج مرض سے بچایا جا سکے۔ انھوں نے تجویز پیش کی کہ نکاح نامے میں تھیلے سیمیا ٹیسٹ کلیئرنس کے خانے کا اضافہ کیا جائے۔

مزید :

کامرس -