ترسیلات زرمیں اضافے کیلئے افرادی قوت کو تربیت فراہم کی جائے

ترسیلات زرمیں اضافے کیلئے افرادی قوت کو تربیت فراہم کی جائے

  

اسلام آباد (اے پی پی) ترسیلات زر کی وصولیوں میں استحکام اور اضافہ کے لئے افرادی قوت کو مارکیٹ کی ضروریات کے مطابق تربیت فراہم کرنے کی ضرورت ہے۔ بھارت اور بنگلہ دیش کی سستی اور بہتر تربیت یافتہ افرادی قوت کے باعث ترسیلات زر کی وصولی میں کمی واقع ہوئی ہے۔ سٹیٹ بینک آف پاکستان کے اعدادوشمار کے مطابق جزشتہ مالی سال کے مقابلہ میں رواں مالی سال کے دوران سمندر پار مقیم پاکستانیوں کی جانب سے بھیجی جانے والی ترسیلات زر کی شرح مین 2 فیصد کے قریب کمی واقع ہوئی ہے۔ رپورٹ کے مطابق امریکہ ، برطانیہ، سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات سے بھیجی گئی ترسیلات زر کم ہوئی ہیں اور سعودی عرب سے ترسیلات زر میں 5.6 فیصد کی کمی سے ترسیلات کا حجم 3.70 ارب ڈالر، یو اے ای سے کی جانے والی ترسیلات میں 1.8فیصد کی کمی سے ترسیلات کا حجم 2.44 ارب ڈالر جبکہ دیگر خلیجی ممالک سے 1.7 فیصد کی کمی سے 1.34 ارب ڈالر کی ترسیلات موصول ہوئی ہیں۔ سمندر پا مقیم پاکستانی ہر سال اربوں ڈالر پاکستان بھیجتے ہیں تاہم گزشتہ چند سالوں کے دوران بھارت اور بنگلہ دیش سمیت دیگر ممالک کی سستی اور بہتر ہنر مند افرادی قوت کی دستیابی سے امریکہ، برطانیہ، سعودی عرب اور یو اے ای وغیرہ میں پاکستانی افرادی قوت کی طلب مین کمی واقع ہوئی ہے جس سے ترسیلات زر بھی کم ہوئی ہیں۔ اقتصادی ماہرین نے کہا ہے کہ ترسیلات زر کی شرح میں اضافہ کیلئے جامع حکمت عملی کے تحت افردی قوت کو مارکیٹ کی ضروریات کے مطابق تربیت فراہم کرنے کی ضرورت ہے۔

مزید :

کامرس -