ٹانک میں آپریشن ، عصمت اللہ ویٹنی کے بیٹے سمیت 4انتہائی مطلوب دہشتگردہلاک

ٹانک میں آپریشن ، عصمت اللہ ویٹنی کے بیٹے سمیت 4انتہائی مطلوب دہشتگردہلاک

  

 ٹانک(مانیٹرنگ ڈیسک)پاک فوج نے فاٹا کے انتظامی یونٹ فرنٹیئر ریجن (ایف آر) ٹانک کے علاقے پنگ میں انٹیلی جنس بنیاد پر آپریشن کرتے ہوئے 4 دہشت گردوں کو ہلاک کردیا۔پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کی جانب سے جاری بیان کے مطابق پاک فوج کے دستوں نے خفیہ اطلاع پر ایف آر ٹانک کے علاقے پنگ میں کارروائی کی جس کے نتیجے میں کالعدم تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) کے عصمت اللہ شاہین ویٹنی گروپ کے 4 انتہائی مطلوب دہشت گرد مارے گئے۔آئی ایس پی آر کے مطابق ہلاک ہونے والوں میں کمانڈر زمان عرف طوفان، نائب کمانڈر عمر ولد عصمت اللہ شاہین، کمانڈر وسیع اللہ اور کمانڈر ظلم دین عرف ظلمت شامل ہیں۔آئی ایس پی آر کے مطابق دہشت گردوں کے قبضے سے اسلحہ اور گولیاں بھی برآمد ہوئیں ۔بیان میں یہ بھی بتایا گیا کہ مذکورہ گروپ مبینہ طور پر ڈیرہ اسماعیل خان، ٹانک اور اطراف کے علاقوں میں ٹارگٹ کلنگ، بھتہ خوری اور اغوا برائے تاوان جیسی وارداتوں میں ملوث تھا۔آئی ایس پی آر کے مطابق عصمت اللہ شاہین کالعدم ٹی ٹی پی شوریٰ کا اہم رکن تھا تاہم اندرونی جھگڑوں کی وجہ سے ٹی ٹی پی کے ایک اور گروہ نے اسے 2014 میں قتل کردیا تھا۔یاد رہے کہ کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے سربراہ حکیم اللہ محسود کی امریکی ڈرون حملے میں ہلاکت کے بعد عصمت اللہ شاہین ٹی ٹی پی کے قائم مقام سربراہ کے ساتھ ساتھ شوریٰ کے بھی رکن رہ چکے ہیں۔عصمت اللہ شاہین نے 2009 میں کراچی میں عاشورہ کے جلوس پر ہونے والے خود کش دھماکے کی ذمہ داری بھی قبول کی تھی جس میں 44 افراد جاں بحق ہوئے تھے۔عصمت اللہ کو 2011ء میں جنوبی وزیرستان میں ٹانک کے مقام پر ملازئی فورٹ پر حملے کا اہم ملزم تصور کیا جاتا ہے جس کے دوران ایک افسر جاں بحق جبکہ 15 فوجیوں کو اغوا کرلیا گیا تھا۔بعد ازاں 11 مغویوں کو سفاکانہ انداز میں قتل کردیا گیا تھا اور ان کی مسخ شدہ لاشیں شمالی وزیرستان سے برآمد کی گئیں تھیں۔

ٹانک آپریشن

راولپنڈی(اے این این،آئی این پی )چیف آف دی آرمی سٹاف جنرل قمرجاویدباجوہ نے پاک افغان سرحدپرغیرقانونی نقل وحرکت اور دہشت گردوں کی دراندازی روکنے کیلئے افغان فو رسز کیساتھ موثر رابطے جاری رکھنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہاہے کہ پاکستان اور افغانستان دہشت گردی کیخلاف مل کرلڑ رہے ہیں اور اور لڑتے رہیں گے ، دہشت گردخواہ کسی بھی رنگ و نسل سے ہوں بلاتفریق کارروائی ہوگی ۔ فوج کے شعبہ تعلقات عامہ( آئی ایس پی آر) کے سربراہ میجر جنرل آصف غیور کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کے زیر صدارت جی ایچ کیو میں اعلیٰ سطح کا سکیورٹی اجلاس ہوا جس میں ملکی سلامتی اور پاک افغان سرحدی صورتحال کا جائزہ لیا گیا ۔اجلاس میں اظہارخیال کرتے ہوئے جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ پاکستان اور افغانستان کی سرحد پر سکیورٹی مشترکہ دشمن سے لڑنے کیلئے بڑھائی گئی ہے، دہشت گردخواہ کسی بھی رنگ و نسل سے ہوں سب کے خلاف بلاتفریق کارروائی ہوگی کیونکہ وہ ہمارے مشترکہ دشمن ہیں۔ انہوں نے کہاکہ سرحد پر ہر طرح کی غیر قانونی نقل و حرکت روکی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور افغانستان دہشت گردی کیخلاف لڑ رہے ہیں اور اور لڑتے رہیں گے ان مشترکہ کوششوں کو جاری رہنا چاہیے۔آرمی چیف نے افغان حکام کی جانب سے شدت پسندی کے خاتمے اورموثر نتائج کے لیے باہمی رابطے بڑھانے کے حوالے سے دی گئی حالیہ تجاویز کا بھی خیر مقدم کیا۔اجلاس میں آرمی چیف نے پاک فوج کو افغان فو ج کے ساتھ سرحد پرموثر رابطے اورتعاون جاری رکھنے کی ہدایت کی تاکہ سرحد پر دہشت گردوں اور غیر قانونی نقل و حمل کو روکا جاسکے۔

آرمی چیف

مزید :

صفحہ اول -