تعلیمی کارکردگی، جھنگ پہلے نمبرپر،لاہور کی آخری پوزیشن

تعلیمی کارکردگی، جھنگ پہلے نمبرپر،لاہور کی آخری پوزیشن

  

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر)سکول ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ نے تعلیمی کارکردگی پر سکولوں کی رینکنگ جاری کردی ، پہلی پانچ پوزیشز میں سے صوبائی دارالحکومت لاہور کوئی بھی پوزیشن حاصل کرنے میں ناکام رہا ۔تعلیمی میدان میں ضلع جھنگ بازی لے گیا ، تمام 36اضلاع میں پہلی پوزیشن حاصل کر لی ۔تفصیلات کے مطابق تعلیمی میدان میں حکومت پنجاب کے نت نئے تجربات کے باعث ہر گزرتے دن کے ساتھ سکولوں کی کارکردگی خراب سے خراب ہوتی جا رہی ہے ۔سکول ایجوکیشن اتھارٹی کے تحت سابقہ ای ڈی اوز کو چیف ایگزیکٹو آفیسر بنائے جانے کے بعد حکومت کی طرف سے تاحال انہیں مکمل اختیارات نہیں دئیے جا سکے ۔ جس کی بدولت سکولوں میں چیک اینڈ بیلنس نہ ہونے کے باعث سکولوں کا تعلیمی معیار بری طرح متاثر ہو رہا ہے ۔ حکومت پنجاب کی جانب سے صوبہ بھر کے سرکاری سکولوں کی رینکنگ جن میں اساتذہ کی حاضری،ایڈمن ،ڈی ٹی ای،نان ٹیچنگ سٹاف ،اور طلباء کی حاضری سمیت 18 انڈیکیٹرز کی جانچ پڑتال کے بعد رینکنگ جاری کی گئی ہے۔ حکومت کی جانب سے جاری کردہ رینکنگ کے مطابق پہلی پانچ پوزیشن میں سے لاہور کوئی بھی پوزیشن نہ لے سکا۔جھنگ پہلی ، پاکپتن دوسری ، اوکاڑہ تیسری ، چکوال چوتھی اور جہلم پانچویں پوزیشن پررہا ، واضح رہے کہ مذکورہ رینکنگ گزشتہ سال اکتوبر، نومبر اور دسمبر کی بنیاد پرجاری کی گئی ہے ، تعلیمی میدان ابتر کارکر دگی کے علاوہ خطرناک بلڈنگزکے حوالے سے لاہور انیس ویں نمبر پرہے۔پانچ سال تک کے عمر کے بچوں کی حاضری کم ہونے پرلاہور چوبیس ویں نمبر پر ، کچی کلاس کی حاضری پر لاہور اکیس ویں نمبر پر ہے۔سی ای اوز اور ڈی ای اوز کے سکول وزٹ نہ کرنے کے باعث لاہورپنتیس ویں نمبر پررہا۔اے ای اوز کا سکولوں پر کنٹرول نہ ہونے پر لاہورچوبیس ویں نمبر پر رہا۔ واضح رہے کہ حکومت پنجاب کی طرف سے جاری کی گئی یہ دوسرے کوارٹر کی رینکنگ ہے جبکہ تیسرے کوارٹرکی رینکنگ اپریل میں جاری کی جائے گی۔

مزید :

صفحہ آخر -