سرکاری تعلیمی اداروں میں ریاضی اور سائنس سیکھنے کا معیار گرگیا،رپورٹ میں انکشاَفَ

سرکاری تعلیمی اداروں میں ریاضی اور سائنس سیکھنے کا معیار گرگیا،رپورٹ میں ...

  

ملتان(سٹاف رپورٹر)پاکستان بھر کے سرکاری تعلیمی اداروں میں ریاضی اور سائنس کے سیکھنے کا معیار مقررہ معیار سے گرگیا‘ جاری کردہ رپورٹ کے مطابق غریب ترین طبقات کے (بقیہ نمبر31صفحہ12پر )

بچوں کو مناسب معیار کی ریاضی اور سائنس کی تعلیم کی سہولت میسر نہیں ہے حالانکہ پاکستان کی معاشی ترقی میں انہی دو مضامین پر خصوصی توجہ دی جانی ضروری ہے نیشنل ایجوکیشن اسسمنٹ سسٹم کے تحت 2014میں ہونے والے امتحانی نتائج کے مطابق آٹھویں جماعت کے بچوں کا ریاضی میں اوسطاًسکور 1000میں سے 461نمبر تھا اور چوتھی جماعت کے بچوں کا ریاضی میں اوسطاًسکور 1000میں سے 433نمبر تک رہا جبکہ پنجاب ایگزامینیشن کمیشن کے 2016میں امتحانی نتائج کے مطابق پانچویں جماعت کے بچوں کا ریاضی میں اوسطاًسکور 53فی صد ،سائنس میں 49فی صد تک رہا جبکہ سندھ کے سٹینڈرڈ اچیومنٹ ٹسٹ کے 2016 میں امتحانی نتائج کے مطابق سندھ میں پانچویں جماعت کے بچوں کا ریاضی ، سائنس میں بھی اسکور 24فی صد رہا ہے جبکہ خیبر پختونخوا‘آزاد جموں و کشمیر، بلوچستان اور فاٹا کے مڈل سکولوں میں تعلیمی معیار سے متعلق این ای اے ایس کے علاوہ کوئی اعدادو شمار موجود نہیں ہیں۔ اس حوالے سے تعلیمی حلقوں نے کہا کہ تعلیمی اداروں میں ریاضی اور سائنس میں معیار کے مطابق تعلیم دی جائے۔

معیار گرگیا

مزید :

ملتان صفحہ آخر -