بھارتی میڈ یا پر پاکستان اور اسلام کے خلاف باتیں کرنے والے طارق فتح کی نئی دہلی میں دھلائی ہو گئی

بھارتی میڈ یا پر پاکستان اور اسلام کے خلاف باتیں کرنے والے طارق فتح کی نئی ...
بھارتی میڈ یا پر پاکستان اور اسلام کے خلاف باتیں کرنے والے طارق فتح کی نئی دہلی میں دھلائی ہو گئی

  

نئی دہلی (ڈیلی پاکستان آن لائن )بھارتی میڈ یا پر پاکستان کے خلاف بات کرنے والے پاکستانی نژاد کینیڈین طارق فتح پر نئی دہلی میں حملہ ہو گیا ،لوگوں نے لاتوں اور گھونسوں سے خوب دھلائی کردی ۔

میڈ یا رپورٹس کے مطابق پیر کے روز بھارتی دارالحکومت نئی دہلی میں ”جشن ِریکھتا“نامی اردو شاعری کے فیسٹیول کے دوران 67سالہ طارق فتح کو لوگوں نے گھیر لیا جس پر اس نے لوگوں سے الجھنا شروع کر دیا ۔اس دوران وہاں موجود نوجوانوں نے اسلام کے خلاف بات کرنے والے طارق فتح کو لاتوں اور گھونسوں کا نشانہ بنا یا،وہاں موجود پولیس اہلکار اور بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر نے بیچ بچاﺅ کرایا ۔اسلام اور پاکستان مخالف سوچ کے مالک اور مسلم کینیڈین طارق فتح نے اس حملے کے حوالے سے کہا کہ میں خوش ہوں کہ 67سال کا ہونے کے باوجود 20سالہ’’ اردو جہادی ‘‘کا سامنا کیا ،وہاں موجود 100بھیڑیے مجھ پر ٹوٹ پڑے تھے ۔

بد حواس ڈونلڈٹرمپ نے سیہون حملے کو سوئیڈن حملہ کہہ دیا ،یورپی ملک میں ہنگا مہ برپا ،امریکی محکمہ خارجہ سے وضاحت طلب

اس نے کہا کہ لوگ مجھے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کا ”کتا “کہہ رہے تھے ۔طارق فتح نے بتا یا کہ ہجوم میں موجود نوجوانوں نے اسے لاتوں اور موقوں کا نشانہ بھی بنا یا ۔اس نے الزام عائد کیا کہ اردو شاعر فیسٹیول منعقد کرانے والوں نے مجھ پر حملہ کرایا ۔دوسری جانب آرگنائزرز کا کہنا تھا کہ ہم ایونٹ کی تیاریوں میں مصروف تھے کہ اچانک دیکھا کچھ لوگ طارق فتح پر حملہ کر رہے ہیں جس پر فوراً پولیس کو اطلاع دے کر بلا یا ۔

واضح رہے کہ پاکستان میں پیدا ہونے والا طارق فتح اب کینیڈین شہری ہے اور وہ بھارتی میڈ یا میں پاکستانی صحافی و دانشور کی حیثیت سے آکر پاکستان اور اسلام کے خلاف باتیں کرتا ہے ۔

مزید :

بین الاقوامی -